The news is by your side.

Advertisement

بچوں کو نہیں آناچاہیے تھا،این جی او کو بتادیا تھا یہ وقت سفارتی تبادلوں کانہیں، گوپال باگلے

نئی دہلی : بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان انتہا پسندوں کی زبان بولنے لگے، گوپال باگلے نے کہا کہ تعلقات کشیدہ ہیں، بچوں کو نہیں آناچاہیےتھا،این جی او کو بتادیا تھا یہ وقت سفارتی تبادلوں کا نہیں۔

تفصیلات کے مطابق نئی دہلی میں ایک این جی او کی دعوت پر پاکستانی اسکولوں کے 50 سے زائد طلباءاور اساتذہ یکم مئی کو بھارت پہنچے تھے، جنہیں انتہا پسند ہندوﺅں کی دھمکیوں کے باعث واپس بھیج دیا گیا۔

بھارتی وزارت خارجہ کے ترجمان گوپال باگلے کا کہنا تھا کہ پاکستانی طلبا اسی دن ہندوستان پہنچے، جس دن ہمارے فوجیوں کو مارنے اور ان کے لاشوں کو مسخ کرنے کا واقعہ ہواتھا، جب ہمیں اطلاع ملی کہ طلباء یکم مئی کو ہندوستان آئے ہیں  تو وزارت نے این جی اوز کو مشورہ دیا کہ یہ اس طرح کے پروگرام کے لیے مناسب وقت نہیں ہے۔

گوپال باگلے نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کشیدہ ہیں، بچوں کو نہیں آنا چاہیے تھا،  تناؤ کی وجہ سے پاکستانی وفد کو واپس بھیجا گیا۔


مزید پڑھیں : بھارتی انتہا پسندوں کی دھمکیاں، 50 پاکستانی طلبا وطن واپس


این جی او نے پاکستانی وفد کو واپس بھیجے جانے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ دورہ مختصر کردیا گیا اور طلباءاور اساتذہ کو واپس لاہور بھیج دیا گیا ہے۔50 رکنی وفد میں شامل طلباءکی عمریں 11سے 15 سال کے درمیان تھیں۔

گزشتہ روز پاکستانی وفد کوبھارتی پولیس نے اپنی نگرانی میں واہگہ بارڈر تک پہنچایا۔

واضح رہے کہ بھارتی انتہا پسندوں نے پاکستانی طالب علموں کی میزبانی کرنے والی ملکی این جی او کی انتظامیہ اور بچوں کو نقصان پہنچانے کی دھمکیاں دی تھیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں