The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں پھنسے پاکستانیوں کی 72 گھنٹوں میں وطن واپسی پر حکومت متحرک

اسلام آباد : سعودی عرب میں پھنسے پاکستانیوں کی 72 گھنٹوں میں وطن واپسی پر حکومت متحرک ہوگئی، وزیر ہوابازی غلام سرور نے کہا پاکستانیوں کی وطن واپسی کابندوبست کیا گیا ہے ، 5 ہزار کےقریب پاکستانیوں کوواپس لانا ہے۔

تفصیلات کرونا وائرس کے باعث سعودی عرب میں پھنسے پاکستانیوں کی 72 گھنٹوں میں وطن واپسی پرحکومت متحرک ہوگئی، وفاقی وزیر ہوا بازی نے کہا ہے کہ اتوار کی شب تک 7 اضافی فلائٹس کا بندوبست کر لیاگیا ، عمرہ زائرین اور برسر روزگار پاکستانیوں کی وطن واپسی کا بندوبست کیا گیا ہے۔

غلام سرور کا کہنا تھا کہ سعودی عرب جانے والوں کے لیے پی آئی اے خصوصی پروازیں چلا رہا ہے، کرونا کے باعث ایک ماہ میں پی آئی اے کو 2 ارب کا نقصان ہو چکا ہے، سعودی عرب سے5 ہزار کے قریب پاکستانیوں کو واپس لانا ہے۔

یاد رہے سعودی حکومت کے اعلان کے بعد پی آئی اے نے 6 خصوصی پروازیں چلانے کا اعلان کیا تھا، جن کے ذریعے پاکستانی شہریوں کو واپس لایا جائے گا اور یہاں سے سعودی عرب پہنچایا جائے گا، ترجمان پی آئی اے کا کہنا تھا کہ 14 اور 15 مارچ کو پروازیں آپریٹ کی جائیں گی۔

مزید پڑھیں : پاکستان اور بھارت میں موجود اقامہ ہولڈرز کے لئے سعودی عرب کا اہم اعلان

سعودی ایوی ایشن نے پاکستان سمیت تمام ممالک کے مسافروں کو سعودیہ عرب سے جانے کے لیے 72 گھنٹے کا الٹی میٹم دیا تھا۔

اس سے قبل کرونا وائرس سے بچاؤ کے لئے سعودی عرب نے 72گھنٹے بعد غیر معینہ مدت تک داخلہ ویزہ بند کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے پاکستان سمیت12 ممالک کے اقامہ ہولڈرز کو تین دن کے اندر اندر سعودی عرب آنے کی ہدایت کی تھی۔

سعودی خبرایجنسی کے مطابق سعودی عرب نے ان ممالک کے لیے سعودی شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کا سفر اور فلائٹس بھی معطل کردیں ، ان میں پاکستان، بھارت ، یورپی یونین کے کئی ممالک اور سوئٹزرلینڈ کے علاوہ سری لنکا، فلپائن، ایتھوپیا، سوڈان، اریٹریا، کینیا، جبوتی، سوڈان اور صومالیہ شامل ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں