The news is by your side.

Advertisement

دھرنے سے نمٹنے کے لیے حکومت کی حکمت عملی تیار

اسلام آباد: دھرنے کے شرکا سے نمٹنے کے لیے حکومت نے حکمت عملی تیار کرلی۔ اے آر وائی نیوز نے پلان کی کاپی حاصل کرلی۔

دھرنے کے شرکا کو رونے کے لیے حکومت نے حکمت عملی تیار کرلی ہے۔

حکمت عملی کے مطابق مختلف علاقوں میں پولیس اور فرنٹیئر کانسٹیبلری کے اہلکار تعینات ہوں گے۔ قیدیوں کو لے جانے والی گاڑیاں اور شیلنگ کے لیے الگ الگ ٹیمیں ہوں گی۔

پولیس اور ایف سی اہلکاروں کو 2 شفٹوں میں تعینات کیا جائے گا۔ اسلام آباد پولیس کو لاہور، ملتان، فیصل آباد، بہاولنگر پولیس کی مدد حاصل ہوگی۔ آزاد کشمیر سے بھی پولیس کے دستوں کو اسلام آباد بلایا گیا ہے۔

واضح رہے کہ تحریک انصاف کی 2 نومبر کے دھرنے اور حکومت کو اس دھرنے کو ناکام بنانے کی تیاریاں جاری ہیں۔

آج صبح اسلام آباد ہائی کورٹ نے اسلام آباد لاک ڈاؤن سے متعلق مقدمات کا فیصلہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ تحریک انصاف پریڈ گراؤنڈ پر دھرنا دے سکتی ہے اور اگر عوام زیادہ ہوئی تو ایکسپریس وے پر دھرنا دینے کی اجازت ہے، اس کے علاوہ کسی اور مقام پر دھرنا دینے کی اجازت نہیں ہے۔ عدالت نے کسی کو گرفتار نہ کرنے اور عمران خان کے پروگرام میں خلل نہ ڈالنے کا حکم بھی دیا ہے۔

دو روز قبل اسلام آباد ہائی کورٹ تحریک انصاف کے کارکنوں کو گرفتار نہ کرنے اور شہر کے داخلی و خارجی راستوں سے کنٹینر ہٹانے کا حکم بھی دے چکی ہے تاہم عدالتی حکم کی خلاف ورزی بھرپور طریقے سے جاری ہے۔

حکومت کی جانب سے تحریک انصاف کے کارکنوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جارہا ہے اور اب تک سینکڑوں کارکنوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ دوسری جانب اسلام آباد کے داخلی راستوں پر کنٹینرلگا دیے گئے ہیں اور شیریں مزاری سمیت تحریک انصاف کے رہنماؤں اور کارکنوں کو اسلام آباد میں داخلے سے روکا جارہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں