The news is by your side.

Advertisement

حکومت کا مولانافضل الرحمان کی تقاریر پر قانونی چارہ جوئی کا فیصلہ

اسلام آباد: حکومت نے جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی آزادی مارچ میں کی گئی تقاریر پر قانونی چارہ جوئی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پی ٹی آئی کی کورکمیٹی کا اہم اجلاس ہوا جس میں آزادی مارچ کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

کورکمیٹی نے مولانافضل الرحمان کی اداروں پرتنقیدکی شدیدمذمت کرتے ہوئے ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرنے کا فیصلہ کیا۔

یہ بھی پڑھیں: دھرنا سیاسی سرگرمی ہے، فوج کا تعلق سیاست سے نہیں ہوتا، ڈی جی آئی ایس پی آر

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان نےمارچ کےدوران مذہب کارڈ کو استعمال کیا، فضل الرحمان نےدھرنےسے کشمیر کاز کو شدید نقصان پہنچایا۔

اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نےمیڈیاکےاموردیکھنےکیلئےایک کمیٹی بھی تشکیل دی جس میں فردوس عاشق اعوان، جہانگیرترین، اسدعمر، اور فوادچوہدری شامل ہیں۔

کمیٹی عوامی فلاح کےاقدامات سےمتعلق منصوبہ بندی اوربیانیہ طے کرےگی، کمیٹی صوبائی حکومتوں کےساتھ مل کرعوام کی فلاح کےلئےکام کرےگی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں