The news is by your side.

Advertisement

نجم سیٹھی کی ‘اشتعال انگیزیوں’ پر حکومتی وزراء کا سخت ردِعمل

اسلام آباد : حکومتی وزراء نے نجی ٹی وی کے اینکر نجم سیٹھی کے پر تشدد بیان کی مذمت کرتے ہوئے ان کیخلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے اینکر نے اپوزیشن کو وزیراعظم اور حکومت کیخلاف تشدد پر اکسانا شروع کردیا، نجی ٹی وی کے اینکر نجم سیٹھی کے پر تشدد بیان پر حکومتی وزراء نے سخت ردعمل کا اظہار کیا۔

صحافی نجم سیٹھی کے پرتشدد بیان پر شیریں مزاری نے درعمل دیتے ہوئے کہا نجم سیٹھی لوگوں کو وزیراعظم پرحملے کیلئےاکسارہےہیں ، کیا یہ قانون سے بالاتر ہیں ،ان کیخلاف سخت کارروائی ہونی چاہیے۔

شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ یہ آدمی پی ٹی آئی ،عمران خان کوگرانے کی ناکام کوشش کرتارہاہے، اب نجم سیٹھی ناامید ہو کر ایسے غلیظ ہتھکنڈے استعمال کررہا ہے۔

وفاقی وزیر علی زیدی نے اپنے بیان میں کہا کہ نجم سیٹھی کی جھنجھلاہٹ اور مایوسی اس ویڈیو کلپ میں واضح ہے ،ع چڑیا والا نجومی نیشنل میڈیا پر لوگوں کو تشدد کیلئے اکسارہاہے۔

وزیر مملکت فرخ حبیب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ صحافت کےنام پر تشددپراکسانےوالانجم سیٹھی بےنقاب ، دنیامیں کہاں صحافی تشددپراکساتا ہے؟ بطورصحافی نجم سیٹھی کیسےتشددکی طرف مائل کررہاہے؟ معاشرےکی اصلاع ایسےہوتی ہے؟ میڈیاکوبھی ایسی کالی بھیڑوں کا محاسبہ کرنا چاہیئے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ پرامن احتجاج ریکارڈ کیاجاسکتاہے مگر توڑ پھوڑ ،جلاؤ گھیراؤ کیلئے نہیں اکسا سکتے، نجم سیٹھی کو کچھ کررہےہیں وہ پرتشدد کے زمرے میں آتا ہے، نجم سیٹھی سے ان کے مؤقف پر جواب دہی ہونی چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ نجم سیٹھی کی سوچ فاشسٹ ہے ، نظرآرہاہے کہ نجم سیٹھی ن لیگ کے چمچے بنے ہوئے ہیں، ن لیگ نے نوازنے کیلئےانھیں چیئرمین پی سی بی کےعہدے کیلئے بھی لگایا۔

خیال رہے نجم سیٹھی نے اپنے پروگرام میں کہا تھا خان صاحب کو چھوڑنا نہیں، لڑائی جھگڑے کرنے پڑیں گے، پچھلی مرتبہ تو پودے بھی نہیں ہلے اس بار بہت سے گملے ہی کیا سر بھی توڑنے پڑیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں