The news is by your side.

عوام پھر ریلیف سے محروم ، حکومت نے آئی ایم ایف کی ایک اور شرط پوری کردی

اسلام آباد : حکومت نے آئی ایم ایف کی شرائط پر ڈیزل پر فی لیٹر لیوی میں مزید ڈھائی روپے کا اضافہ کرکے 32 روپے50 پیسے کردی۔

تفصیلات کے مطابق عوام ایک بار پھر ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں ریلیف سے محروم رہ گئے، حکومت نے آئی ایم ایف کی شرائط پر ڈیزل پر فی لیٹر لیوی میں مزید ڈھائی روپے کا اضافہ کردیا۔

ہائی اسپیڈ ڈیزل پر فی لیٹر لیوی 30 روپے سے بڑھا کر 32 روپے50 پیسے کردی گئی جبکہ پیٹرول پر فی لیٹر پر لیوی 50 روپے برقرار رکھی گئی ہے۔

پیٹرول اور ہائی اسپیڈ ڈیزل پر سیلز ٹیکس کی شرح زیرو پر برقرار ہے ، وفاقی حکومت نے16 دسمبر سے بھی ہائی اسپیڈ ڈیزل پر لیوی 5 روپے بڑھائی تھی۔

خیال رہے ملک کو درپیش سنگین معاشی بحران سے نکالنے کے لیے حکومت آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات میں بریک تھرو کے لیے سرگرم ہے اور جنوری میں آئی ایم ایف سے معاملات طے پا سکتے ہیں۔

یاد رہے گذشتہ ماہ انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) نے وفاقی وزیر خزانہ اسحٰق ڈار کے اقدامات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ڈیزل پر لیوی مزید بڑھانے کا مطالبہ کیا تھا، جس کے بعد حکومت نے آئندہ ماہ بھی ڈیزل پر مکمل ریلیف نہ دینے کا فیصلہ کیا۔

وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا تھا کہ 2 ماہ میں یعنی فروری 2023 تک 20 روپے مزید پیٹرولیم لیوی بڑھائی جائے گی، آئی ایم ایف کے ساتھ ڈیزل پر فی لیٹر 50 روپے لیوی عائد کرنے کا معاہدہ ہے، لیوی بڑھانے سے ٹیکس محصولات ہدف حاصل نہ ہوا تو سیلز ٹیکس عائد کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں