The news is by your side.

Advertisement

5ریگولیٹری اداروں سےمتعلق لیگی حکومت کا فیصلہ واپس لینے کی تیاریاں

اسلام آباد : وفاقی حکومت نے پانچ ریگولیٹری اداروں کا کنٹرول وزارتوں سے لیکر کابینہ ڈویڑن کو دینے کی تجویز دے دی ، مسلم لیگ ن کی حکومت نے 2016 میں 5 ریگولیٹری اداروں کو متعقلہ وزارتوں کے ماتحت کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے 5 ریگولیٹری اداروں سے متعلق لیگی حکومت کا فیصلہ واپس لینے کی تیاریاں کرلی ہے، نیپرا، اوگرا، پیپرا، پی ٹی اے اور فریکوئنسی ایلوکیشن بورڈ کا انتظامی کنٹرول وزارتوں سے واپس لینے کی تجویز سامنے آئی ہے۔

نیپرا کا انتظامی کنٹرول پاور ڈویژن سے اور اوگرا کا انتظامی کنٹرول پیٹرولیم ڈویژن سے اور پیپرا کا انتظامی کنٹرول وزارت خزانہ سے واپس لینے کی تجویز دی گئی جبکہ پی ٹی اے، فریکونسی ایلوکیشن بورڈ کا انتظامی کنٹرول وزارت آئی ٹی سے لینے کی تجویز بھی دی ہے۔

ذرائع کے مطابق اداروں کو دوبارہ کابینہ ڈویڑن کے ماتحت کرنے کے لیے رولز آف بزنس میں ترمیم کی جائے گی جبکہ وزارت قانون نے 5 اداروں کو کابینہ ڈویژن کے ماتحت کرنے کی تجویز سے اختلاف کر دیا ہے۔

مزید پڑھیں : نیپرا، اوگرا سمیت 5 ریگولیٹری اتھارٹیز، وزارتوں کے ماتحت

یاد رہے 2016 میں مسلم لیگ ن کی حکومت نے ریگولیٹری اداروں کو متعقلہ وزارتوں کے ماتحت کیا تھا جبکہ ماضی میں قیمتوں کے تعین میں شفافیت برقرار رکھنے کے لیے اِن ریگولیٹری اتھارٹیز کو وزارتوں کے ماتحت کرنے کے بجائے آزاد اور خود مختار ادارے کے طور پر کام کرنے کا موقع دیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں