The news is by your side.

Advertisement

حکومت کا ایمنسٹی اسکیم متعارف کروانے کا فیصلہ

اسلام آباد: وزیر مملکت برائے خزانہ رانا افضل نے کہا ہے کہ ایمنسٹی اسکیم کالے اور سفید دھن دونوں کیلئے ہوگی، آئی ایم ایف کو قرضہ  ادائیگی کے لیے جون سے پہلے عالمی منڈی میں یورو اور سکوک بانڈز فروخت کئے جائیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایسوسی ایشن بلڈرزاینڈڈیولپرز  آباد ہاؤس میں تاجروں سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، وزیر مملکت برائے خزانہ کا کہنا تھا کہ باہر جانے والا ملکی پیسہ واپس لانے کے لیے جلد ایمنسٹی اسکیم متعارف کروائی جائے گی جو کالے اور سفید دھن رکھنے والوں کے لیے ہوگی۔

اُن کا کہنا تھا کہ اسکیم کے تحت خواہش مند شخص کو ایک بار موقع فراہم کیا جائے گا اور ایمنسٹی کو صرف آفشور کمپنیوں تک مخصوص نہیں کیا جائے گا۔ وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ سے منظوری ملتے ہی اسکیم کا باقاعدہ اعلان کیا جائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ آئی ایم ایف کو قرضے کی واپس ادائیگی کے لیے ڈالر کا بندوبست کر رہے ہیں،اس ضمن میں عالمی منڈی میں جون سے پہلے یورو اور بانڈز فروخت کریں گے، ان کا کہنا تھا کہ پراپرٹی سیکٹر میں ملکی دولت کا بڑا حصہ پھنس جاتا ہے، 18 ارب ڈالر کی ترسیلات زر میں سے 8 ارب ڈالر کی رقم پراپرٹی سیکٹر میں لگ جاتے ہیں۔

رانا افضل کا کہنا تھا کہ زمین کی لین دین کے حوالے سے جتنا ریٹرن پاکستان میں ہے اور کہیں بھی نہیں ، پراپرٹی سیکٹر کے ریٹرنز پر حکومت کو تحفظات ہیں کیونکہ یہ سیکٹر گھروں کی تعمیر اور فراہمی کم قیمت میں نہیں کرتا۔ وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ حکومت کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ پراپرٹی سیکٹر ایمانداری کے ساتھ انکم ٹیکس کی ادائیگی کو یقینی بنائے تاکہ ملکی خزانے کو اس کا براہ راست فائدہ پہنچ سکے۔

اس موقع پر آباد کے چیئرمین عارف جیوا کا کہنا تھا کہ درآمدات پر ریگولیٹری ڈیوٹی عائد ہوتے ہی اسٹیل کی قیمت 70 ہزار روپے ٹن سے بڑھ کر 92 ہزار ٹن تک پہنچ چکی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں