site
stats
سندھ

ایک سال میں ہزار سے زائد مردے نکالے، گرفتار گورکن کا اعتراف

کراچی: شہر قائد میں قبریں فروخت کرنے والا ایک اور گورکن گرفتار کرلیا گیا، پولیس شہری کی نشاندہی پر حرکت میں آئی،گروہ کا ایک کارندہ گزشتہ روز یاسین آباد قبرستان سے رنگے ہاتھوں گرفتار ہوچکا ہے۔

تفصیلات کے مطابق شہر قائد میں انسانوں کے بعد اب مردے بھی محفوظ نہیں، گورکنوں کا مردے نکال کر قبریں فروخت کرنے کاگورکھ دھندا جاری ہے ۔ پولیس نے ایک اور گورکن نعیم عرف کلو کو گرفتار کرلیا جو یاسین آباد قبرستان میں قبریں فروخت کرتا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ قبروں کی خرید و فروخت کرنے گروہ کا سرغنہ  کے ایم سی کا ملازم ہے، نعیم عرف کلو نے بتایا کہ گروہ کے سرغنہ جس قبر کو او کے کرتے تھے اس کو کھودا جاتا تھا۔


پڑھیں: ’’ پولیس کی کارروائی، مکروہ دھندے میں ملوث گورکن گرفتار ‘‘


ملزم نے اعتراف کیا ہے کہ ایک سال میں ہزار سے زیادہ قبریں کھودیں، قبر سے مردوں کی ہڈیوں کی باقیات جمع کر کے ایک ایک قبر میں پانچ افراد کی باقیات چھپائی جاتی تھی۔

خیال رہے شہری کی جانب سے شکایت موصول ہونے کے بعد گزشتہ روز عزیزآباد انوسٹی گیشن پولیس نے یاسین آباد قبرستان میں کارروائی کرتے ہوئے قبروں کی فروخت میں ملوث گورکن کو رنگے ہاتھوں گرفتار کیا تھا، پولیس کے مطابق ملزم دورانِ تفتیش اپنے جرم کا اعتراف کرچکا ہے۔

دریں اثنا جمعے کو گرفتار ہونے والے پہلے ملزم کی ضمانت منظور ہوگئی اس ملزم کی نشاندہی پر آج ملزم نعیم کالو کو گرفتار کیا گیا،  ملزم کے گروہ میں چھ افراد شامل ہیں، ملزمان 3 سال سے ایک درجن سے زائد قبرستانوں میں قبریں فروخت کررہے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top