The news is by your side.

Advertisement

بڑی خوشخبری؛ ایک اور کرونا ویکسین تیار

واشنگٹن: امریکا کی ایک اور دواساز کمپنی نے کرونا ویکسین بنانےکا دعویٰ کردیا ہے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق امریکی دو اسازکمپنی موڈرنا کا دعویٰ ہے کہ نئی بنائی گئی کرونا ویکسین 94.5 فیصد مؤثرہے۔

اس سے قبل امریکا کی فارما کمپنی فائزر نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے کرونا ویکسین کے فیز تھری کا کامیاب تجربہ کیا ہے جس کے 90 فی صد مؤثر نتائج سامنے آئے ہیں ، اس حوالے سے سی ای او امریکی فارما کمپنی فائزر البرٹ برلا کا کہنا تھا کہ آج انسانی تاریخ اور سائنس کیلئے بہت بڑا دن ہے، فائزر نے جرمنی کی کمپنی بائیواینٹیک کےساتھ مل یہ ویکسین تیار کی تھی۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ امریکہ کی دواساز کمپنی فائزر کے سی ای اوالبرٹ برلا نے کہا تھا کہ اکتوبر کے آخر تک پتہ چل جائے گا کہ ویکسین مؤثر ہے یا نہیں اور اگر یہ مؤثر ثابت ہوتی ہے تو دسمبر تک یہ امریکہ میں تقسیم ہوسکتی ہے۔

البرٹ بورلا کا کہنا تھا کہ ویکسین کا محفوظ اور مؤثر ہونا ضروری ہے، اور اس کی تیاری مستقل بنیادوں پر اعلیٰ ترین معیارات کےتحت ہونی چاہیے، ہم رواں ماہ کے آخر تک جان سکیں گے کہ آیا یہ ویکسین مؤثر ہے یا نہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  امریکی کرونا ویکسین کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے؟ بڑا انکشاف

امریکی ادارے ایف ڈی اے نے کہا تھا کہ بچوں میں ویکسینز کا ٹیسٹ دوا سازوں کے لیے بہت اہم مرحلہ ہوگا، چند۔ڈاکٹرز ان پر اپنے خدشات کا بھی اظہار کر چکے ہیں کہ کرونا ویکسین کے ٹیسٹ کے دوران کچھ بچوں میں خطرناک اور کمیاب۔بیماری ملٹی سسٹم انفلامیٹری سنڈروم پیدا ہوسکتی ہے۔

واضح رہے کہ جے اینڈ جے نے ستمبر کے آخر میں تیسرے مرحلے کے دوران 60 ہزار رضاکاروں پر کرونا ویکسین کا تجربہ شروع کر دیا تھا تاہم اسے رواں ماہ کے شروع میں روک دیا گیا کیوں کہ ایک رضاکار کی حالت بگڑ گئی تھی، تاہم پچھلے ہفتے اس تجربے کو پھر سے بحال کر دیا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں