The news is by your side.

Advertisement

یونان میں انسانوں کے بعد ایک مخصوص جانور بھی کرونا کا شکار ہونے لگا

یونان: کرونا وائرس سے آبی نیولے بھی محفوظ نہ رہ سکے، اب یونان میں بھی آبی نیولے کرونا وائرس کا شکار ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈنمارک کے بعد یونان میں بھی آبی نیولے (mink) کو وِڈ 19 کا شکار ہونے لگے ہیں، الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق یونان کے علاقے کوزانی میں فارموں میں پروان چڑھائے جانے والے آبی نیولوں میں کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔

کوزانی میں ویٹرنری سروسز ڈائریکٹریٹ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ علاقے کے نیولا فارموں کے ملازمین میں کرونا وائرس کی تشخیص کے بعد کالونیری میں واقع فارم کے 8 زندہ اور مردہ نیولوں سے لیے گئے نمونوں میں سے سب کے نتائج مثبت نکلے۔

محکمہ زراعت کی وزارت نے بھی کہا ہے کہ شمالی یونان کے دو نیولا فارمز میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، ویٹرنری سروسز کے سربراہ کا کہنا تھا کہ حالیہ دنوں میں نیولوں میں اموات کی شرح بڑھ گئی ہے۔

کورونا کی روک تھام کے لیے 10 لاکھ نیولے مارنے کا فیصلہ

رپورٹس کے مطابق کوزانی میں کثیر تعداد میں نیولوں میں پژمردگی، بھوک کی کمی اور سانس میں دشواری جیسی علامات نمودار ہونا شروع ہوگئی ہیں، جس کے باعث مقامی حکام نے ڈھائی ہزار نیولے تلف کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

شمالی یونان کے جن علاقوں میں آبی نیولے کرونا کا شکار ہونے لگے ہیں ان میں کوزانی اور کستوریا شامل ہیں، ان میں تقریباً 90 نیولا فارمز پر ملازمین اور نیولوں کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں۔ جب کہ ان دو علاقوں میں فارمز پر ایک اندازے کے مطابق 10 لاکھ نیولوں کی پرورش کی جا رہی ہے۔

یاد رہے کہ ایک ماہ قبل ڈنمارک کی حکومت نے کرونا وائرس کی روک تھام کے لیے 10 لاکھ نیولوں کو مارنے کا فیصلہ کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں