The news is by your side.

Advertisement

پاکستان گرین ہائیڈروجن بجلی بنانے والے ممالک کی فہرست میں شامل

کراچی: سندھ حکومت کے ایک پروجیکٹ کے ساتھ پاکستان گرین ہائیڈروجن بجلی بنانے والے ممالک کی فہرست میں شامل ہونے جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چینی کمپنی پاور چائنا اور اوریکل پاور پبلک لمیٹڈ کے درمیان ایک ایم او یو پر دستخط ہو گئے ہیں، جس کے تحت صوبہ سندھ میں 400 میگا واٹ گرین ہائیڈروجن بجلی کا پلانٹ لگایا جائے گا۔

ملک کے اس پہلے گرین پاور پروجیکٹ کے ساتھ پاکستان گرین ہائیڈروجن بجلی بنانے والے ملکوں کی فہرست میں شامل ہو جائے گا، ایم او یو پر دستخط کی تقریب میں وزیر توانائی سندھ امتیاز شیخ اور چینی قونصل جنرل لی بی جون بھی موجود تھے۔

اس معاہدے کے مطابق ہوا اور سورج کی روشنی سے چلنے والے 400 میگا واٹ گنجائش کے پاور پلانٹ سے ایک لاکھ پچاس ہزار کلو گرام گرین ہائیڈروجن روزانہ پیدا ہو سکے گی۔

امتیاز شیخ نے اس موقع پر کہا کہ سندھ حکومت بجلی کا پلانٹ لگانے کے لیے تمام سہولت فراہم کرے گی، متبادل توانائی پالیسی کے تحت زمین کی فراہمی حکومت سندھ کی جانب سے ہوگی۔

ایک ماہ میں تیسری بار بجلی کی قیمت میں اضافہ

انھوں نے بتایا کہ یہ ملک کا پہلا گرین پاور پروجیکٹ ہے، پاکستان کے توانائی بحران کا حل صرف سندھ کے پاس ہے، سستی، آلودگی سے پاک بجلی فراہمی سندھ حکومت کا نصب العین ہے۔

تقریب میں دی گئی بریفنگ میں بتایا گیا کہ اس وقت دنیا بھر میں گرین ہائیڈروجن کے 350 سے زائد منصوبے تعمیر کے مراحل میں ہیں، جن کا مقصد ٹرانسپورٹ، صنعتوں اور ہوا بازی کے شعبوں کو ڈی کاربو نائز کرنا ہے۔ ایک اندازے کے مطابق اس پالیسی پر سرمایہ کاری اور عمل درآمد جاری رہا تو 2050 تک ہائیڈروجن دنیا کی 24 فی صد سے زائد طلب کو پورا کر سکے گی۔ اس وقت صرف 4 فی صد ہائیڈروجن گرین ذرائع سے حاصل کی جا رہی ہے۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ سندھ میں لگائے جانے والے گرین ہائیڈروجن کے اس پلانٹ سے حاصل شدہ گرین ہائیڈروجن ابتدا میں چین اور خطے کے دیگر ممالک میں بھی برآمد کی جا سکے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں