The news is by your side.

Advertisement

خلا میں پہلی بار ہری مرچ اگانے کا کامیاب تجربہ، ویڈیو دیکھیں

خلا میں پہلی مرتبہ بین الاقوامی خلائی اسٹیشن میں مرچیں اگانے کا کامیاب تجربہ کیا گیا، یہ مرچیں مکمل طور پر تیار ہوچکی ہیں جس کا ذائقہ بہت ترش اور زمینی مرچوں جیسا ہی ہے۔

آپ نے اب سے قبل ایلینز یعنی خلائی مخلوق کے بارے میں سنا ہوگا لیکن آج ہم آپ کو خلائی ہری مرچ کے بارے میں نہ صرف بتائیں گے بلکہ اس کی ویڈیو بھی دکھائیں گے۔

اس حوالے سے عالمی خلائی اسٹیشن میں پہلی بار مرچیں اگانے کا تجربہ کیا گیا ہے، ان مرچوں کو وہاں رہنے والے خلاء نوردوں نے کھا کر دیکھا اور اس کا ذائقہ بھی بہترین قرار دیا۔

امریکی خلائی تحقیقی ادارے “ناسا” کے منصوبے “ہیبی ٹیٹ 4” کے تحت زمین سے مرچوں کے بیج اس سال جون میں عالمی خلائی اسٹیشن (آئی ایس ایس) پہنچائے گئے تھے جہاں ایک خصوصی تجربہ گاہ میں انہیں اُگایا گیا۔

چند روز بعد ان بیجوں سے پودے نکل آئے جو اگلے دو ماہ میں خاصے بڑے ہو کر اس قابل بھی ہوگئے کہ ان میں مرچیں اُگنے لگیں۔ بالآخر پچھلے مہینے یعنی اکتوبر2021 میں یہ سرخ اور سبز مرچیں بھی اتنی بڑی ہو گئیں کہ کھائی جاسکیں۔

یہ مرچیں استعمال کرتے ہوئے امریکی خلا نورد میگن مک آرتھر نے خلائی اسٹیشن پر موجود سارے عملے کے لیے میکسیکو کے روایتی “ٹاکوز” تیار کیے، یہ عربی “شوارما” جیسے دکھائی دیتے ہیں۔

ٹاکوز کی یہ خلائی دعوت پچھلے جمعے کو ہوئی جس کے بعد خلائی اسٹیشن کے عملے سے ان مرچوں کے ذائقے اور دوسری خصوصیات کے بارے میں ایک سروے فارم بھروایا گیا۔

میگن نے اپنی ٹویٹ میں لکھا کہ سب لوگوں کو ان خلائی مرچوں کا ذائقہ بہت پسند آیا، باقی بچی ہوئی “خلائی مرچیں” محفوظ کرلی گئی ہیں جنہیں تحقیق کے لیے زمین پر واپس پہنچایا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں