The news is by your side.

Advertisement

توہین مذہب کی آڑ میں بینک مینجر کو قتل کرنے والا مجرم انجام کو پہنچا

خوشاب: صوبہ پنجاب کی مقامی عدالت نے توہین مذہب کے نام پر کئے گئے قتل کا فیصلہ سنادیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق خوشاب کی انسداددہشتگردی کی عدالت نے توہین مذہب کا الزام لگا کربینک منیجر کو قتل کرنے والے سیکیورٹی گارڈ کو دو بار سزائے موت اور بارہ سال قید کی سزا سنادی ہے۔

انسداددہشتگردی عدالت کے جج نے اپنے فیصلے میں کہا کہ جرم ثابت ہونے پر ملزم کو ساڑھے11لاکھ روپے جرمانے عائد کیا جاتا ہے، جرمانے کی عدم ادائیگی پر مزید دو سال جیل میں گزارنا ہونگے۔واضح رہے واقعہ گذشتہ سال نومبر میں پیش آیا تھا، پولیس کے مطابق خوشاب کی تحصیل قائد آباد میں واقع نیشنل بینک آف پاکستان کی برانچ کے منیجر ملک عمران حنیف کو سیکیورٹی گارڈ نے رائفل سے فائرنگ کرکے زخمی کردیا تھا۔

زخمی مینجر کو فوری طور پر مقامی ہسپتال منتقل کیا گیا،زخمی بینک منیجر کو تشویش ناک حالت میں لاہور منتقل کیا گیا جہاں وہ سروسز ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔

واقعے کے بعد گرفتار سیکیورٹی گارڈ کا کہنا تھا کہ اس نے ملک عمران حنیف کو توہین رسالت پر قتل کیا ہے۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں