The news is by your side.

ڈھائی میٹر لمبی نایاب نسل کی گٹار فش پکڑی گئی

گوادر : بلوچستان میں پسنی کے ساحل پر نایاب نسل کی مچھلی پکڑی گئی۔ مچھلی شکار کے دوران ماہی گیروں کے جال میں پھنسی تھی۔

محکمہ وائلڈ لائف کے تربیت یافتہ عملے نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے نایاب نسل کی مچھلی کوبچا کر دوبارہ سمندر میں چھوڑ دیا۔

پسنی کے ساحل سے پکڑی جانے والی ڈھائی میٹر لمبی مچھلی کوگٹار فش کہاجاتا ہے۔ ڈبلیو ڈبلیو ایف کے مطابق مچھلی مقامی ماہی گیروں کے جال میں پھنسی جس کے بعد نایاب مچھلی کوریسکیو کیا گیا۔

پسنی کےساحل سے پکڑی گئی مچھلی دنیا کی نایاب قسم کی مچھلی ہے جو سمندر میں بہت کم پائی جاتی ہے۔

گٹار فش عام طور پر سمندر کی تہہ میں گارے اور ریت کے اندر رہنے کی عادی ہیں اور سمندری کیڑے مکوڑے کھاکر گزاراکرتی ہیں ۔

یہ پانی کی تینوں اقسام نمکین ،تازے اور کھارے پانی میں رہ سکتی ہیں ۔یہ عام طور پر سمندر میں 30میٹر پانی کے نیچے رہتی ہیں اور ماہی گیروں کا شکار بننے سے اکثراوقات محفوظ رہتی ہیں ۔


Rare Fish Discovered From Pasni Beach by arynews

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں