The news is by your side.

Advertisement

گجرپورہ کیس، ملزم عابد کے فرار کی کہانی سامنے آگئی

لاہور: گجر پورہ زیادتی کیس کے مفرور ملزم عابدعلی کےفرار کی کہانی سامنے آگئی، ملزم عابدکی گرفتاری کیلئے چھاپہ مارا توملزم کوپہلےہی سےشک ہو گیا۔

ذرائع کے مطابق پولیس کو قصورکےگاؤں راجہ جھنگ میں ملزم کی موجودگی کی اطلاع ملی تو ملزم گھر کےگیٹ سے ہی پولیس کو دیکھ کر کھیتوں میں بھاگ گیا تھا۔

پولیس کے مبینہ طور پر 4 افسران اور اہلکار تھے، ملزم کے فرارکے بعد پولیس افسران مبینہ طور پر گھر میں ہی موجود رہے۔

پولیس نےکھیتوں سے ملزم کو گھیرا ڈال کر پکڑنےکی بجائے ہوائی فائرنگ پر اکتفا کیا اور بعد ازاں پولیس 5گھنٹے سے زائد ملزم عابدکو ڈھونڈتی رہی۔

پنجاب کی پولیس گجرپورہ واقعہ کے مرکزی ملزم عابد کواب تک گرفتار نہیں کر سکی، عابد کی گرفتاری کے لیے رات گئے قصور میں سرچ آپریشن کیا گیا تاہم پولیس ایک بار پھر ملزم کو گرفتار کرنے میں ناکام رہی۔

پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مرکزی ملزم عابد علی کی اہلیہ کو حراست میں لے لیا تھا اور اہلیہ بشریٰ سے تفتیش کی جارہی ہے۔

عابد کے بارے میں انکشاف ہواتھا کہ وہ اجرتی قاتل رہ چکا ہے اور پچیس ہزارروپے لے کر قتل کیا کرتا تھا ،ملزم عابد مختلف جرائم میں چار بار پولیس کے ہاتھوں پکڑا جاچکا ہے۔

دوسری جانب مرکزی ملزم عابد علی کے ایک ساتھی شفقت علی کو پہلے ہی گرفتار کیا جا چکا ہے اور اسے 15 ستمبر کو 14 دن کے جوڈیشل ریمانڈ پر بھیج دیا گیا تھا۔

لنک روڈ زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد علی کا نام بلیک لسٹ میں ڈال دیا گیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب پولیس کی سفارش پر عابد علی کا نام بلیک لسٹ کیاگیا، عابد کا نام بلیک لسٹ میں ڈال کر متعلقہ اداروں کو آگاہ کردیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں