The news is by your side.

Advertisement

ایک اور ننھی کلی مبینہ زیادتی کا شکار

معاشرہ بے حس ہوچکا یا جنسی درندے بے خوف ہوگئے، جہاں یکے بعد دیگرے کم عمر بچیوں سے مبینہ زیادتی کے واقعات تھمنے کا نام نہیں لے رہے ہیں۔

افسوسناک واقعہ گوجرانوالہ کے علاقے شہزادہ شہید کالونی میں پیش آیا ،جہاں انسانی روپ میں موجود وحشی درندوں نے نو سالہ بچی سے مبینہ زیادتی کرڈالی۔

پولیس کی جانب سے جاری بیان کے مطابق دو وحشی درندوں نے بچی کو ورغلایا اور قریبی گھر میں لے جاکر مبینہ زیادتی کا نشانہ بنایا، واقعے کے بعد متاثرہ فیملی نے زیادتی کا مقدمہ درج کرایا۔

مقدمے کے اندراج کے بعد پولیس نے فوری کارروائی کی اور دونوں سفاک ملزمان کو گرفتار کرلیا، ملزمان میں فیضان اور علی نوید شامل ہیں جبکہ متاثرہ بچی کو میڈیکل کے لئے سول اسپتال گوجرانوالہ منتقل کردیا گیا ہے۔

گوجرانوالہ میں نو سالہ بچی سےزیادتی کے افسوسناک واقعے پر چیئرپرسن چائلڈ پروٹیکشن بیورو نے نوٹس لیا ہے، چیئرپرسن سارہ احمد کی جانب سے جاری بیان کے مطابق نو سالہ بچی سےزیادتی کاواقعہ انتہائی افسوسناک ہے، پولیس نےدو ملزمان کوگرفتارکرلیاہے جبکہ بچی کومیڈیکل کےلیےاسپتال منتقل کردیاگیاہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کم عمر بچی سے زیادتی ثابت، مجرم کو سزائے موت کا حکم

پنجاب میں کم سن بچیوں سے مبینہ زیادتی کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے، آئے روز پنجاب میں بچیوں کے ساتھ ساتھ بچے بھی وحشی درندوں کی ہوس کا شکار ہوتے جارہے ہیں۔

رواں ماہ کی چودہ تاریخ کو پنجاب کے ضلع چنیوٹ میں قوت گویائی و سماعت سے محروم لڑکی کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا، دو روز بعد میاں چنوں میں 17سالہ لڑکی کو ملازمت کا جھانسہ دیکر تین افراد نے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

اس سے قبل پنجاب میں اجتماعی زیادتی کا ایک اور واقعہ پیش آیا تھا جہاں ملتان کے علاقے قادر پور ران میں تین بچوں کی ماں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں