site
stats
سندھ

چھری مارچھلاوے کو پکڑنے کیلئے چھ سو پولیس اہلکار تعینات

knife

کراچی : خواتین کو زخمی کرنے والے چھری مار کو پکڑنا ناممکن ہوگیا ہے، چھلاوے کو پکڑنے کیلئے چھ سو پولیس اہلکار گلستان جوہر کے اطراف تعینات کردیئے گئے جبکہ چار مشکوک افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق گلستان جوہرمیں چھرا مار کو پکڑنا مشکل ہی نہیں ناممکن ہوتا جارہا ہے، خوف کی علامت بننے والے چھرا مار ملزم کی گرفتاری کیلئے ایک ایس ایس پی، پانچ ایس پیز کے زیر نگرانی پولیس اور سادہ لباس اہلکاروں کی ٹیمیں تیار کرلی گئی ہیں۔

پولیس نے گلستان جوہر رابعہ سٹی اور پہلوان گوٹھ سے چار مشکوک افراد کو حراست میں لے لیا۔ ایس ایس پی ملیر راؤ انوار بھی ٹیم کے ہمراہ چھلاوے کو پکڑنے کے سرگرم ہوگئے، اتنی ٹیمیں اتنے اہلکار اور حملہ آور صرف ایک ہے.

ملزم قانون کی آنکھوں میں دھول جھونک کر وار پر وار کررہا ہے لیکن پولیس صرف اقدامات پر اقدامات کررہی ہے۔

قبل ازیں کراچی میں خواتین پرچاقو سےحملہ کرنے والے ملزم وسیم کی گرفتاری کیلئے سی ٹی ڈی نے ساہیوال اور گجرانوالہ میں چھاپےمارے لیکن پولیس ملزم کو گرفتار نہ کرسکی۔

ملزم وسیم کی ہمشیرہ نے بتایا ہے کہ اس کا بھائی ان دنوں کراچی میں ہے اور بیس دن سے کوئی رابطہ نہیں ہوا، پولیس کے مطابق آخری کال بھی گلستان جوہر سے ٹریس ہوئی، پولیس حکام کے مطابق وسیم کے گھر والے بھی اب غائب ہوگئے ہیں ان کے گھر پر تالا لگا ہوا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top