The news is by your side.

Advertisement

قازقستان میں شدت پسندوں کو پولیس ہیڈکوارٹر پر حملہ، دو جاں بحق متعدد زخمی

الماتے: قازقستان میں پولیس ہیڈ کوارٹر پر دہشت گرد حملے میں دو پولیس اہلکار ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوئے ہیں، حملہ آوروں سے مقابلہ جاری ہے۔

مقامی پولیس کے مطابق تیل کی دولت سے مالا مال ملک قازقستان کے سب سے بڑے شہر الماتے کے مرکزی علاقے میں مبینہ مذہبی شدت پسندوں نے پولیس کو نشانہ بنایا ہے۔

پولیس اور ریسکیو ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ چکی ہیں اورپولیس ہیڈ کوارٹر اور ںیشنل سیکیورٹی کمیٹی کے ہیڈ آفس سمیت شہرکے وسطی علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے جبکہ ریلوے اسٹیشن پربھی پولیس نے ناکہ بندی کردی ہے۔

ریسکیوذرائع سے تاحال موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق دو پولیس اہلکاردہشت گردوں کی کاروائی میں ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ پانچ زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

پولیس نے ایک حملہ آور کو حراست میں لے لیا ہے جبکہ اس کے مبینہ ساتھیوں کی تلاش میں جگہ جگہ چھاپے جاری ہیں۔

قازقستان پولیس نے عوام سے اپیل کی ہے کہ کچھ گھنٹوں تک مذکورہ علاقے میں اپنی نقل و حمل کو بالکل محدود کردیں اور کوشش کریں کہ کسی انتہائی ضرورت کے بغیر گھر سے باہرنہ نکلیں اور کوئی مشکوک شخص نظرآئے تو اس سے الجھنے کے بجائے پولیس کو اطلاع دیں۔

ایک عینی شاہد نے پولیس کو فون پر اطلاع دی تھی کہ ایک شخص اس کی دکان کے سامنے سے ہاتھ میں رائفل تھامے گزرا ہے جس کے چند لمحموں بعد ہی فائرنگ کا سلسلہ شروع ہوگیا۔

(Фото одного из стрелявших) Очевидцы присылают фото с места задержания стрелявшего в Алматы. Сообщается, что мужчина задержан в районе КБТУ. ➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖➖ Сообщается, что на место прибыли сотрудники спецподразделений. “Все в бронежилетах, с оружием в масках. Всех людей загоняют в здание. Слышна стрельба в сквере на Абылай хана – Казыбек би. “По словам очевидцев, ранены трое полицейских. Преступник устроил стрельбу на Абылай хана ниже Толе би. Потом побежал по Толе би, где его задержали”. Алматинцев просят не выходить из дома из-за проведения антитеррористической операции 18.07.2016 года на территории города Алматы объявлено о проведении антитеррористической операции. В этой связи просим всех не прокидать свои жилища, избегать мест массового скопления людей. Обо всех подозрительных лицах незамедлительно сообщать в правоохранительные органы, и с пониманием отнестись к действиям сотрудников правоохранительных и специальных органов”, – говорится в сообщении ДВД Алматы. Об изменениях оперативной ситуации общественность будет информирована дополнительно. #Almaty #Алматы #НовостиКазахстана

A photo posted by Свежие Новости Казахстана (@tigrohaud) on

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ قازقستان کے ایک اورشہر قازخ میں مذہبی دہشت گردوں اسلحے کی دو دکانیں لوٹ کر ایک بس ہائی جیک کی تھی اور ملٹری بیس پرحملہ کیا تھا جس کے نتیجے میں سات افراد ہلاک اور 37 زخمی ہوئے تھے جن میں سے زیادہ تر کا تعلق آرمی سے تھا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں