The news is by your side.

Advertisement

مزدوروں اور محنت کشوں کی مدد کے لیے 200 ارب روپے مختص کیے ہیں، حفیظ شیخ

اسلام آباد: مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کے پیش نظر مزدوروں اور محنت کشوں کی مدد کے لیے 200 ارب روپے مختص کیے ہیں، 200 ارب روپے کی رقم وفاق دے گا، صوبے بھی حصہ ڈالیں گے۔

تفصیلات کے مطابق مشیر خزانہ حفیظ نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ کرونا وائرس کے پیش نظر برآمدات کے شعبے کے لیے 100 ارب روپے کے ٹیکس ریفنڈ دیں گے، وزیراعظم نے مجموعی سوا کھرب روپے کا ریلیف پیکیج منظور کیا، زراعت اور ایس ایم ای کے لیے 100 ارب روپے مختص کیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کھاد کی قیمت کرکے دیگر سبسڈائز اشیا دیں گے، ایس ایم کے لیے سود اور اصل زر کی ادائیگی کے لیے وقت دیں گے، ایک کروڑ 20 لاکھ خاندانوں کو مالی امداد دی جائیں گی، یوٹیلٹی اسٹورز سے دال، چاول، آٹا گھی، چینی سستا دینے کے لیے 50 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔

مشیر خزانہ کے مطابق 82 لاکھ ٹن گندم کسانوں سے خریدنے کے لیے 280 ارب روپے رکھے ہیں، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں فوری طور پر 15 روپے فی لیٹر کم کریں گے، گیس اور بجلی کے بلوں میں تین ماہ کی اقساط کی سہولت دی جائے گی، کھانے پینے کی اشیا پر ٹیکسز ختم ہوں گے اور کچھ میں کمی ہوگی۔

مزید پڑھیں: کرونا وائرس، ٹیکس میں کمی اور سبسڈیز میں اضافہ کیا جائے گا، حفیظ شیخ

حفیظ شیخ نے کہا کہ این ڈی ایم اے آلات اور ویکسین کی خریداری کے لیے 25 ارب روپے رکھے گئے ہیں، کرونا کے باعث اخراجات ہوں گے لیکن آئی ایم ایف کمٹمنٹ متاثر نہیں ہوگا، ہماری معیشت مستحکم ہورہی تھی، برآمدات میں اضافہ ہورہا تھا، ہمارا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 20 ارب ڈالر سے کم ہوکر 3 ارب ڈالر رہ گیا، جاری کھاتوں کے خسارے میں نمایاں کمی آئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کرونا کی وبا کی وجہ سے اقتصادی سرگرمیاں بھی متاثر ہوں گی، لوگوں کی آمدن میں کمی ہوگی تو ٹیکسز کم ہوں گے، وفاق اور صوبے اس معاملے پرمل کر چل رہے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں