The news is by your side.

Advertisement

دھرنے میں قانون کو ہاتھ میں لیں گے اور نہ ہی فورسز پر حملہ کریں گے، حافظ حسین احمد

اسلام آباد : جمیعت علمائے اسلام ف کے رہنما حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ دھرنے کے موقع پر ہم قانون کو ہاتھ میں نہیں لیں گے نہ ہی فورسز پر حملہ نہیں کریں گے، حکومت نے کوئی حماقت کی تو یہ ان کے گلے پڑ سکتا ہے۔

یہ بات انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں میزبان ارشد شریف سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

حافظ حسین احمد نے کہا کہ دھرنے کے موقع پر اگر حکومت نے کسی قسم کی کوئی حماقت کی تو یہ ان کے گلے ایسے پڑے گا کہ لوگ سانحہ ماڈل ٹاؤن بھول جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پھر ملک بھر میں جو صورتحال ہوگی حکمران اس کا تصور بھی نہیں کرسکتے، ہم لاشوں کی سیاست نہیں کریں گے ہم لاشیں اٹھائیں گے کسی کو نہیں ماریں گے۔

رہنما جے یوآئی ایف نے کہا کہ ہمارے کچھ پلان ہیں جن کا رہبر کمیٹی کو بھی بتادیا ہے، رہبر کمیٹی ہی ہمارے ان پلان کااعلان کرے گی، ہمارامعاہدہ حکومت سے نہیں بلکہ اسلام آباد انتظامیہ کے ساتھ ہوا تھا۔

ایک سوال کے جواب میں حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ ہم تو سمجھ رہے تھے کہ پرویزخٹک مذاکراتی کمیٹی کے سربراہ ہیں، ہمیں بیٹھے دس دن ہوگئے لیکن اب تک حکومت نے سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ2014کے دھرنے میں سب سے پہلے اسمبلی کو متحرک کیا گیا تھا، آج قومی اسمبلی کا اجلاس ہوا لیکن وزیراعظم نے اس میں شرکت نہیں کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں