The news is by your side.

Advertisement

بھارت یاد رکھے یہ 1971 نہیں 2016 ہے، حافظ سعید

اسلام آباد : امیرِ جماعت الدعوہ حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ بھارتی قابض فوج نے ظلم کی نئی داستان رقم کردی ہے،گرفتار حریت پسند رہنماؤں اور کارکنان کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا نے کے بعد اُن کی لاشوں پر کیمیکل گرا کر مسخ کیا جارہا ہے۔

وہ اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے حریت پسند مجاہد ماجد زرگر کی لاش کو کیمیکل سے مسخ کردیا گیا۔ دکھ کی بات ہے اقوام متحدہ، یورپ اور امریکا سب خاموش ہیں۔

اس موقع پر حافظ سعید نے پندرہ دسمبر کو مظفرآباد میں کشمیر کانفرنس منعقد کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر کانفرنس کے ذریعے بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ کو بھرپور جواب دیا جائے گا۔

حافظ محمد سعید کا کہنا تھا کہ کشمیرمیں انڈیا کی آٹھ لاکھ فوج نے جارحیت کی انتہا کردی ہے، بھارتی فوج خطرناک اور مہلک کیمیکل کا استعمال معصوم لوگوں پر کر رہی ہے، میڈیا کشمیر میں کیمیکل ہتھیاروں کے استعمال پر بھارتی چہرہ بے نقاب کرے۔

انہوں نے بھارتی حکمرانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ یہ 1971 نہیں بلکہ 2016 ہے، اب کشمیر بھارت کے پاس نہیں رہے گا بلکہ جلد آزاد ہوگا۔

حافظ سعید نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ پاکستانی حکمراں بھارتی جارحیت پر کھل کر مذمت نہیں کر رہے ہیں نہ عالمی سطح پر گلبھوشن یادیو کے اعترافات کو اُٹھایا گیا اور نہ ہی بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ کی پاکستان کے 10 ٹکڑے کرنے کی دھمکی کا نوٹس لیا گیا۔

انہوں نے پاکستان کی وزراتِ خارجہ کی کارکردگی کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور اسرائیل و انڈیا کے درمیان ہونے والے پاکستان مخالف دفاعی معاہدوں پر تشویش کا اظہار کیا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں