The news is by your side.

Advertisement

میری زندگی کوسنگین خطرات ہیں، حلیم عادل شیخ کا چیف جسٹس پاکستان کو خط

کراچی : سندھ اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے چیف جسٹس پاکستان کو خط میں اپنی زندگی کو سنگین خطرات لاحق ہونے کے خدشے کا اظہار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی کے اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے چیف جسٹس پاکستان کو خط لکھ دیا اور خط چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ، اسپیکر سندھ اسمبلی، آئی جی ،چیف سیکریٹری ودیگرکو بھی ارسال کردیا۔

خط میں کہا گیا کہ کہ میری زندگی کوسنگین خطرات ہیں ، جب سےاپوزیشن لیڈر بنا ہوں مجھ پر 20 سےزائدجھوٹے مقدمات بنائے گئے اور عوام کی آواز اٹھانے پر کئی بار جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئیں۔

حلیم عادل شیخ نے الزام لگایا گیا کہ آصف زرداری ،بلاول نے وزیراعلیٰ اور فرنٹ مینوں کے ذریعےپلان بنایاہے، لاڑکانہ،عمرکوٹ، ملیر اور نواب شاہ میں مجھ پراورمیری ٹیم پرمسلح حملےکیےگئے۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ آصف زرداری اوربلاول نےمیرے خلاف جعلی مقدمات درج کرائے ،پہلےسےدرج بیشتر مقدمات میں عدالتوں سے باعزت بری ہو چکا ہوں لیکن آئینی ذمہ داریاں نبھانے سے روکنے کی کوشش کی ہے۔

پہلی بارسندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرکوبجٹ تقریرسےروکاگیا، گزشتہ ایک ماہ سےمجھے ایک بارپھرسیاسی طور پر نشانہ بنایا جارہا ہے، میرے خلاف بے بنیاد مقدمات درج کرائے ہیں۔

متعددبار میرے گھر پر چھاپے مار کے خاندان کو ہراساں کیا گیا، جس ایس ایچ او نے چھاپے مارے وہ خودقتل کافرارمجرم تھا، ثبوت موجود ہیں زرداری نے قتل کرانے کا پلان بنایا ہے۔

ٹاسک انٹی کرپشن افسران و کرپٹ پولیس افسران کو دیا گیا ہے،مجھے پولیس کی حراست میں قتل کرنے کا پلان بنایا گیا ہے، جس کا ٹاسک انٹی کرپشن افسران و کرپٹ پولیس افسران کو دیا گیا ہے ، جسے ایک حادثے کا رنگ دیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں