The news is by your side.

Advertisement

کراچی کی نصف آبادی کی بجلی معطل ہونے کا خدشہ

کراچی: کے الیکٹرک کا بجلی کی تقسیم کار کمپنی سے 22 سالہ معاہدہ ختم ہونے کے بعد شہر قائد کی نصف آبادی کو بجلی کی فراہمی بند ہوجائے گی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی والوں کے لیے بری خبر یہ ہے کہ کل سے شہر کی آدھی آبادی میں بجلی معطل ہونے کاخدشہ ہے کیونکہ کے الیکٹرک کا آج یعنی 19 جون 2019 کو تقسیم کارکمپنی سے22سالہ معاہدہ ختم ہوجائےگا۔

معاہدہ ختم ہونے کے بعد شہر میں 123میگاواٹ بجلی کی پیداوار معطل ہوگی جس کے باعث شہر کی نصف آبادی کومشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق کےالیکٹرک بالکل مفت بجلی حاصل کر کے شہر قائد کے عوام سے ماہانہ کروڑوں روپے وصول کرتی ہے، نیشنل گرڈسےکےالیکٹرک کو 6سو میگاواٹ سے زائدبجلی فراہم کی جاتی ہے۔

مزید پڑھیں: کراچی کے مختلف علاقوں میں طویل غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ، شہریوں کا احتجاج

کے الیکٹرک نے تاحال فرنس آئل سے بجلی کی پیداوار شروع نہیں کی، مقامی کمپنی سے 22 سال قبل معاہدہ آج ختم ہونے جارہاہے، اس ضمن میں نیپرا نے پاور ڈویژن کو خط ارسال کر کے صورتحال سے آگاہ کردیا۔

نیپرا کی جانب سے بھیجے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ سنگین صورتحال کے باعث کے الیکٹرک کو نیشنل گرڈ سے فوری اضافی بجلی فراہم کی جائے، ذرائع کے مطابق فریقین معاہدے میں توسیع کے خواہش مند تھے البتہ اسٹیک ہولڈرز نے اس کی مخالفت کردیْ

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں