site
stats
عالمی خبریں

دبئی دنیا کا پہلا ’’ پیپر لیس اسمارٹ سٹی‘‘ بنے گا، ولی عہد حمدان بن راشد

دفتری امور میں کاغذات کے بجائے صرف انٹرنیٹ پر کام ہوگا

دبئی : ولی عہد شیخ حمدان بن راشد مختوم نے کہا ہے کہ 2021 کے بعد متحدہ عرب امارات کے سرکاری اداروں میں دفتری امور کے لیے صفحات کا کردار ختم ہوجائے گا اور تمام کام کمپیوٹرائزڈ ہو جائیں گے جن کے پرنٹ آؤٹ کی بھی ضرورت نہیں رہے گی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کے روز ’اسمارٹ دبئی آفس‘‘ کے ہیڈ کوارٹر میں منعقد کردہ ایک تقریب میں ’’ پیپر لیس حکمت عملی ‘‘ کو بیان کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ یہ حکمت عملی متحدہ عرب امارات کے سربراہ راشد بن المکتوم کی ہدایات پر ترتیب دی گئی ہے جن کا خواب دبئی کو ایک اسمارٹ سٹی میں تبدیل کرنا ہے جہاں جدید تقاضوں کو کماحقہ پورا کیا جائے گا اور یہ اپنی نوعیت کا پہلا شہر ہوگا۔


 یہ پڑھیں : ولی عہد حمدان بن راشد المکتوم کا دل دہلانے والے خطرناک اسٹنٹ کا مظاہرہ


ولی عہد حمدان بن راشد نے کہا کہ ’’پیپر لیس اسٹریٹیجی‘‘ کے نفاز کے بعد سرکاری دفاتر میں مراسلات اور دیگر کاموں کے لیے صفحات کے استعمال کے بجائے انٹرنیٹ کا استعمال ہوگا اور تمام تر ڈیٹا اور کام کمپیوٹر پر منتقل ہوجائیں گی۔


 یہ بھی پڑھیں : دبئی، ولی عہد حمدان بن راشد 2017 کی پُر اثر شخصیت منتخب


انہوں نے مزید کہا کہ اس حکمت عملی کے بعد دبئی کے سرکاری دفاتر میں سالانہ ایک ارب صفحات کا استعمال ختم ہوجائے گا جنہیں ٹھکانے لگانا یا محفوظ رکھنا ایک دشوار کام تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top