The news is by your side.

Advertisement

حمزہ شہباز نے نیب کے وارنٹ گرفتاری کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا

لاہور : قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نے نیب کے وارنٹ گرفتاری کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا، جس میں کہا گیا ہے کہ عدالت وارنٹ گرفتاری کو فوری معطل کرے اور نیب کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز نے نیب کے وارنٹ گرفتاری کے خلاف درخواست دائر کردی ، جس میں مؤقف اختیار کیا لاہور:نیب نے غیر قانونی طور پر گھر پر چھاپہ مارا، ہائی کورٹ گرفتاری سے قبل آگاہ کرنے کا حکم دے چکی ہے۔

درخواست میں حمزہ شہباز کا کہنا ہے عدالت وارنٹ گرفتاری کو فوری معطل کرے اور استدعا کی کہ نیب کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

خیال رہے نیب ٹیم آج دوسرے روز بھی قائد حزب اختلاف پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کو  گرفتار کرنے شہبازشریف کی رہائش گاہ 96ایچ پہنچ گئی ہیں، نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ شہباز کو ہر صورت گرفتارکریں گے۔

یاد رہےگذشتہ روز لاہور میں قومی احتساب بیورو (نیب) کی ٹیم نے حمزہ شہباز کی گرفتاری کے لئے ان کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا اور سوا گھنٹے کے قریب ن لیگی رہنماؤں اور کارکنوں کی مزاحمت کے بعد ٹیم انہیں گرفتار کرنے میں ناکام رہی تھی، حمزہ شہباز کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں چھاپہ مارا گیا۔

مزید پڑھیں : گرفتاری میں مزاحمت، نیب کی ٹیم حمزہ شہباز کو گرفتار کیے بغیر واپس روانہ

نیب حکام حمزہ شہباز کی گرفتاری کا وارنٹ بھی ساتھ لیکر آئے، تاہم انھیں شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا، اس دوران ایک اہلکار کے کپڑے بھی پھاڑے دیئے گئے اور ٹیم کو روکنے کیلئےحمزہ شہبازکی رہائش گاہ کے مرکزی دروازے کے باہر لیگی رہنماؤں اورکارکنوں نے دھرنابھی دیا۔

ڈی جی نیب لاہورنےصورتحال سےچیئرمین نیب کوآگاہ کیا، صورتحال کے پیش نظر مشاورت کےبعدگرفتاری کافیصلہ ملتوی کردیاگیا تھا۔

نیب نے اعلامیے میں کہا تھا کہ نیب لاہور کی ٹیم حمزہ شہباز کی آمدن سے زائد اثاثہ جات اور مبینہ منی لانڈرنگ کے کیس میں ٹھوس شواہد کی بنیاد پر گرفتاری کے لیے گئی تھی تاہم حمزہ شہباز کے گارڈز کی جانب سے غنڈہ گردی کا مظاہرہ کیا گیا جبکہ حمزہ شہباز کےمحافظوں نےنیب اہلکاروں کو دھمکیاں دی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں