عمران خان انتظار میں رہتےہیں، کہیں سے کوئی شیروانی آجائے اور وہ وزیراعظم بن جائیں
The news is by your side.

Advertisement

عمران خان انتظار میں رہتےہیں، کہیں سے کوئی شیروانی آجائے اور وہ وزیراعظم بن جائیں،حمزہ شہباز

لاہور : مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی اور وزیراعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے حمزہ شہباز کا کہنا ہے کہ مخالفین کو عام انتخابات میں منہ کی کھانی پڑے گی، جولائی 2018میں عوام اپنا فیصلہ دیں گے ، عمران خان انتظارمیں رہتے ہیں، کہیں سے کوئی شیروانی آجائےاور وہ وزیراعظم بن جائیں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کے صاحبزادے اور مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی حمزہ شہباز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عام انتخابات میں عوامی عدالت لگے گی، عوام کارکردگی دکھانےوالوں کو ہی ووٹ دینگے، الفین کبھی دھاندلی تو کبھی دھرنوں کے پیچھے چھپتے ہیں۔

حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ مخالفین کبھی دھاندلی تو کبھی دھرنوں کے پیچھے چھپتے ہیں، سینیٹ الیکشن وقت پر ہورہے ہیں، انشااللہ عام انتخابات بھی وقت پرہوں گے ، مخالفین کو عام انتخابات میں منہ کی کھانی پڑے گی۔

رہنما مسلم لیگ ن نے کہا قائد کے خواب کی تعبیر کیلئے جمہوریت کو مضبوط کرنا ہوگا، پاکستانی قوم سب کچھ دیکھ رہی ہے اور اپنا ذہن بنارہی ہے، لوٖڈشیڈنگ ختم کرنے کا معاملہ غیر حل طلب نظر آتا تھا، آج 20بیس گھنٹےکی لوڈ شیڈنگ چندگھنٹوں کی رہ گئی ہے، ملک میں میٹروزبن رہی ہیں ترقیاتی پراجیکٹس پرکام ہورہا ہے۔

عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ عمران خان !آپ عمربھروزیراعظم نہیں بن سکتے، عمران خان چور دروازے کے انتظار میں رہتے ہیں، کہیں سے کوئی شیروانی آجائے اور وہ وزیراعظم بن جائیں۔


مزید پڑھیں :   عوام پھر ن لیگ کو اقتدار میں‌ لائیں گے:حمزہ شہباز


حمزہ شہباز نے مزید کہا کہ جولائی 2018میں عوام اپنافیصلہ دیں گے، ووٹ ڈالنےنہ آنےوالوں کی نظرمیں جمہوریت کی کیا اہمیت ہوگی۔

یاد رہے کہ  گذشتہ روز حمزہ شہباز نے اپنے خطاب میں‌ کہا تھا کہ نواز شریف کی قیادت میں دن دگنی رات چوگنی ترقی ہوئی، اسی وجہ سے عوام پھر سے ن لیگ کو منتخب کرنا چاہتے ہیں ، کہ اگر پھر اقتدار میں‌ آئے، تو بلدیاتی نمائندوں کے فنڈز دگنے کر دیں گے اور ان کے اختیارات میں اضافہ کیا جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں