The news is by your side.

Advertisement

ایف سی ایریا میں دستی بم حملہ،ایک بچہ جاں بحق، 21 افراد زخمی

کراچی: شہر قائد کے علاقے ایف سی ایریا لیاقت آباد میں‌ امام بارگاہ پر دستی بم حملے کے نتجے میں ایک بچہ ہلاک جب کہ 21 افراد زخمی ہوگئے جن میں 11  خواتین  بھی شامل ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے رپورٹر شاہنواز شاہ کے مطابق لیاقت آباد چار نمبر ایف سی ایریا میں واقع امام بارگاہ میں مجلس جاری تھی کہ موٹر سائیکل سوار نامعلوم افراد نے دستی بم پھینکا اور فرار ہوگئے۔

حملے کے نتیجے میں‌ ایک بچہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگیا جب کہ 21 افراد زخمی ہوگئے جنہیں‌امدادی اداروں‌ نے فوری طور پر عباسی شہید اسپتال منتقل کیا جہاں انہیں‌ طبی امداد دی جارہی ہے۔

اسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ زخمیوں‌ میں‌ دوسے تین افراد کی حالت تشویش ناک ہے جس کے سبب ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے، زخمیوں‌ میں‌ گیارہ خواتین بھی شامل ہیں۔

گورنر سندھ کا نوٹس، تحقیقات اور زخمیوں کے علاج کا حکم

گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان نے دستی بم حملے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی اور کہا کہ زخمیوں کو علاج کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں۔

ہدایت ملنے کے بعد آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر کو جائے وقوع پر پہنچنے کی ہدایت کردی۔

جائے وقوع پہنچنے کے بعد مشتاق مہر نے کہا کہ سیکیورٹی انتظامات کا جائزہ لے رہے ہیں اگر پولیس کی کوتاہی ہوئی تو کارروائی کی جائے گی۔

آصف زرداری کا نوٹس

سابق صدر آصف زرداری نے بھی حملے کا نوٹس لیتے ہوئے کہا ہے کہ ملوث مجرموں کو قانون کی گرفت میں لایا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں