The news is by your side.

Advertisement

اسپتال انتظامیہ ہینڈ سینیٹائزر مریضوں کے بستر سے باندھنے پر مجبور

لندن: کرونا وائرس کے خوف نے برطانوی لوگوں کو بھی چوری کرنے پر مجبور کر دیا ہے، ملک میں ہینڈ سینیٹائزر کی قلت کے باعث لوگوں نے اسپتالوں سے چوری کرنا شروع کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی اسپتالوں سے ہینڈ سینیٹائزر چوری ہونے کا معاملہ اتنی سنجیدگی اختیار کر گیا ہے کہ محکمہ صحت کو اپیل جاری کرنی پڑی ہے، این ایچ ایس نے اپنی اپیل میں کہا ہے کہ خدارا سینیٹائزر چوری نہ کریں، اس سے مریضوں کی زندگیوں کو خطرہ ہے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق مارکیٹ میں سینیٹائزر کی قلت پیدا ہو گئی ہے، جس کے باعث چوری کی وارداتیں ہونے لگی ہیں، مجبور ہو کر اسپتالوں میں اسٹاف نے سینیٹائزر کی بوتلیں مریضوں کے بستر سے باندھنا شروع کر دی ہیں، این ایچ ایس کا کہنا تھا کہ ایکسیڈنٹ ایمرجنسی سے بھی لوگوں نے سینیٹائزر چوری کر لیے، اس سے مریضوں کی زندگی خطرے میں پڑ سکتی ہے۔

کرونا کا خوف، چھینکنے پر دوران پرواز مسافروں میں جھگڑا

دریں اثنا، نجی اسپتالوں نے بھی سینیٹائزر چوری نہ کرنے کی اپیل کر دی ہے۔ لندن کے ایک اسپتال میں کینسر کے وارڈ کے اسٹاف نے ٹویٹر اکاؤنٹ پر اپیل کی کہ مجھے شرم آ رہی ہے یہ کہتے ہوئے کہ جب آپ اسپتال آئیں تو پلیز ہمارے وارڈز سے ہینڈ سینیٹائزرز اٹھا کر نہ لے جائیں۔

ایک اور قومی اسپتال کے اسٹاف نے ٹویٹر پر لوگوں سے اپیل کی کہ ‘اب بڑے ہو جائیں اور تمیز دکھائیں’۔ نوٹنگھم میں کوئینز میڈیکل سینٹر کی ایک نرس نے لکھا کہ میں آج مریض کے بستر سے ہینڈ سینیٹائزر باندھے پر مجبور ہوئی، برائے مہربانی ہمارا سینیٹائزر نہ چرائیں۔

خیال رہے کہ برطانیہ میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 35 تک پہنچ گئی ہیں جب کہ 1391 افراد وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں