حنیف عباسی کی سپرنٹنڈنٹ دفتر میں موجودگی، اڈیالہ جیل کے 5اہلکار معطل -
The news is by your side.

Advertisement

حنیف عباسی کی سپرنٹنڈنٹ دفتر میں موجودگی، اڈیالہ جیل کے 5اہلکار معطل

راولپنڈی : مسلم لیگ ن کے رہنما حنیف عباسی کی سپرنٹنڈنٹ اڈیالہ جیل کے کمرے میں موجودگی کی تحقیقات کے بعد سپرنٹنڈنٹ سمیت 5 اہلکار معطل کردیئے گئے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب نے تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ مسترد کرنے کے بعد سپرنٹنڈنٹ جیل سعید اللہ گوندل کو بھی عہدے سے ہٹانے کی منظوری دی جبکہ ڈی آئی جی جیل راولپنڈی کے خلاف انکوائری کرنے کا بھی حکم دیا گیا ہے۔

معطل ہونے والوں میں اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ سعید اللہ گوندل، ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ فرخ اعجاز، اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ ساجدعلی، وارڈن محمدامتیاز اور محمد ارشد شامل ہیں، تحقیقاتی ٹیم نے ڈی آئی جی جیل خانہ جات نوید رؤف کو کلیئر قرار دیا۔

ذرائع کے مطابق انکوائری کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں چھوٹے اہلکاروں پر سارا ملبہ ڈال دیا اور تصویر میں نظرآنے والے سپرنٹنڈنٹ سعید اللہ گوندل کو بے گناہ قرار دے دیا گیا جسے وزیر اعلیٰ پنجاب نے مسترد کردیا اور انہیں بھی معطل کرنے کے احکامات جاری کیے۔

مزید پڑھیں: اڈیالہ جیل میں حنیف عباسی کی تصویر سے متعلق تحقیقات مکمل، چھوٹے اہلکار قصور وار قرار

یاد رہے 19 ستمبر کو نواز شریف کی رہائی کے وقت جیل کے کمرے میں لی گئی تصویر میں حنیف عباسی بھی موجود تھے، تصویر سوشل میڈیا پروائرل ہونے کے بعد پنجاب حکومت کی جانب سے تحقیقات کا آغاز کیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں : نواز شریف اور لیگی رہنماؤں کی اڈیالہ جیل میں تصویر کی اندرونی کہانی

اس سلسلے میں  ڈی آئی جی جیل خانہ جات ملک شوکت فیروز اور اے آئی جی ملک سرفراز نواز پرمشتمل تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں