The news is by your side.

مریم اورنگزیب کو ہراساں کرنے کا معاملہ: ن لیگ کا برطانوی حکومت سے رابطے کا فیصلہ

اسلام آباد : مسلم لیگ ن نے لندن میں مریم اورنگزیب کوہراساں کے معاملے پر برطانوی حکومت سے رابطے کا فیصلہ کرتے ہوئے قانونی کارروائی کرنے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطا تارڑ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے اقوام متحدہ میں پاکستان کا مقدمہ بہترین انداز میں لڑا، وزیراعظم نے مسئلہ کشمیرکو بہترین انداز میں دنیا کے سامنے اجاگر کیا اور دنیا کو باور کرایا بھارت کا جارحانہ رویہ کسی صورت قبول نہیں۔

عطااللہ تارڑ کا کہنا تھا کہ لندن میں مریم اورنگزیب کو ہراساں کرنے کی شدید مذمت کرتے ہیں، مریم اورنگزیب کو ہراساں کرنے کے معاملے پربرطانیہ سے رابطہ کریں گے، یہ ملک کی عزت کاسوال ہے،ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کریں گے۔

ن لیگی رہنما نے کہا کہ ایسا ماحول پیدا نہ کیاجائے کہ آپ بھی گھر سے باہرنہ نکل سکیں،حکومت کے پاس 100طریقے ہیں ، آپ کو عدالتوں میں جانا پڑے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ جب نائکوپ منسوخ ہوگا تو آپ کو خود پتہ لگ جائے گا ، نہتی لڑکی کو کس طرح ہراساں کیاگیا، رانا ثنااللہ کو درخواست دی جائے گی معاملے پر قانونی کارروائی کی جائے۔

عطااللہ تارڑ نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ عمران نیازی نے اپنے لوگوں کی ٹریننگ اورحوصلہ افزائی کی ہے، اگر ہم نے بھی اپنے لوگوں کی حوصلہ افزائی کی تو کسی کا عوام میں نکلنا ممکن نہیں ہوگا۔

مسلم لیگ ن کے رہنما کا کہنا تھا کہ یہ نہ سمجھیں کہ آپ کوبرطانیہ میں سزانہیں ہوگی، میں نےدرخواست تیارکرلی ہے، آج وزیرداخلہ راناثنااللہ سے ملاقات بھی کرونگا، ان لوگوں کےخاندان والوں سے بھی رابطہ کیا جائے گا۔

پنجاب حکومت کے حوالے سے انھوں نے کہا کہ پنجاب اسمبلی کااجلاس گزشتہ 4ماہ سےاجلاس جاری ہے، پرویز الہیٰ کو خدشہ ہے اگر اجلاس ختم کر کے نیا بلایا تو ہوسکتا ہے گورنر اعتماد کے ووٹ کاکہیں اور اعتمادکا ووٹ لینے کیلئے186اراکین کی حمایت درکار ہے۔

عطااللہ تارڑ نے دعویٰ کیا کہ گورنر نے اعتماد کا ووٹ لینے کا کہا تو وہ گنتی پوری نہیں کرسکیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں