site
stats
پاکستان

حویلیاں حادثے کے بعد تنہا ہونیوالی لڑکی نے سرپرست کا فیصلہ کرلیا

چترال : حویلیاں میں پی آئی اے طیارہ حادثے میں ایک ہی خاندان کے چھ شہید افراد کی واحد وارث 14 سالہ حسینہ گل نے فیصلہ کرلیا ہے کہ وہ کس کے پاس رہے گی۔ چترال کی حسینہ گل حادثے کے بعد شدید ذہنی اذیت کا شکار تھی کہ وہ رہے تو کس کے پاس رہے۔ حسینہ گل نےآخرکار اپنے والد کے کزن کو اپنا سرپرست بنانے کا فیصلہ کرہی لیا۔

تفصیلات کے مطابق حویلیاں طیارے حادثے میں چترال سے تعلق رکھنے والی 14 سالہ لڑکی جس کے تمام گھر والے اس اندوہناک حادثے میں اس سے بچھڑ گئے ہیں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ اب اپنے والد کے کزن کے ساتھ رہے گی۔

چودہ سالہ حسینہ گل نے چائلڈ پروٹیکشن بیورو کی ٹیم کے سامنے عدالت میں بیان دیا کہ وہ اپنے والد کے کزن کےساتھ رہنا چاہتی ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر چترال الطاف احمد نے ان خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ حسنیہ گل سے متعلق کوئی جرگہ نہیں ہوا۔ ذہنی دباؤ کا شکار لڑکی فی الحال ابھی کسی سے بات کرنے کی حالت میں نہیں ہے، لڑکی کیلئے نفسیاتی ڈاکٹرکی ضرورت ہے اوراسے کسی سے ملنے بھی نہیں دیا گیا۔

مزید پڑھیں : طیارہ حادثہ: معاوضے کیلئے لوگوں کا تنہا لڑکی سے رشتہ داری کا دعویٰ

انہوں نے کہا کہ لڑکی کے ٹھیک ہونے پر امدادی چیک دینے کا فیصلہ کیا جائیگا۔ واضح رہے کہ 7 دسمبر کو حویلیاں طیارہ حادثے میں جہاں معروف نعت خواں جنید جمشید سمیت 47 افراد لقمہ اجل بنے وہیں چترال سے تعلق رکھنے والی 14 سالہ لڑکی حسینہ گل کا پورا خاندان حادثے کی نذر ہوگیا تھا، جس کے بعد تقریباً سوا تین کروڑ کی امدادی رقم کے لالچ میں لڑکی سے رشتہ داری کا دعویٰ کررہے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top