The news is by your side.

Advertisement

بجٹ 23-2022: وزارت صحت کے تین نئے منصوبے

اسلام آباد: بجٹ 23-2022 کی سفارشات میں وزارت صحت نے تین نئے منصوبے پیش کر دیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزارت صحت کی بجٹ 23-2022 کی سفارشات اے آر وائی نیوز نے حاصل کر لیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ بجٹ سفارشات 3 نئے منصوبوں پر مشتمل ہیں۔

ذرائع کے مطابق وزارت صحت نے 23-2022 کے لیے 12 ہزار 42 ملین روپے فنڈز مانگ لیے ہیں، وزارت صحت نے 32 جاری منصوبوں کے لیے بھی 11 ارب 44 کروڑ فنڈز مانگے ہیں۔

ذرائع نے کہا ہے کہ وزارت صحت نے آئندہ مالی سال میں 3 نئے منصوبوں کے لیے 60 کروڑ مانگے ہیں، بجٹ سفارشات میں اس سلسلے میں نیشنل ہیلتھ سپورٹ پروگرام کے لیے 25 کروڑ روپے، اسلام آباد کینسر اسپتال کی تعمیر کے لیے 25 کروڑ روپے، اور بوکراں ہیلتھ سینٹر کی تعمیر کے لیے 10 کروڑ روپے مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

آئندہ مالی سال ترقیاتی بجٹ کا حجم 800 ارب روپے ہوگا

ذرائع کے مطابق آزاد کشمیر، گلگت بلتستان میں کینسر مریضوں کے لیے 10 کروڑ، کوئٹہ میں الرجی سینٹر کے قیام کے لیے 1 کروڑ 70 لاکھ، راولپنڈی میں زچہ بچہ اسپتال کے لیے 1 ہزار ملین، اسلام آباد میں 4 بی ایچ یوز کی تعمیر کے لیے 16 کروڑ، پمز میں 200 بستر کی نئی ایمرجنسی کے قیام کے لیے 1 ارب رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔

اسلام آباد میں جناح اسپتال کی تعمیر کے لیے 2 ارب، پمز شعبہ نیورو سرجری کی اپ گریڈیشن کے لیے 495 ملین، پمز زچہ بچہ اسپتال میں آئی سی یو توسیع منصوبے کے لیے 25 کروڑ، این آئی ایچ کے ڈرگ ٹیسٹنگ ڈویژن کی اپ گریڈیشن کے لیے 20 کروڑ، جب کہ بری امام میں کمیونٹی ہیلتھ سینٹر کے قیام کے لیے 168 ملین مختص کرنے کی تجویز ہے۔

وزیر اعظم ہیلتھ انشورنس پروگرام فیز ٹو کے لیے 2500 ملین مختص کرنے کی تجویز ہے، اسلام آباد میں محفوظ انتقال خون پروگرام کے لیے 135 ملین، ہمک اسلام آباد میں زچہ بچہ سینٹر کی تعمیر کے لیے 182 ملین، اور کنگ سلمان بن عبدالعزیز اسپتال ترلائی کی تعمیر کے لیے 55 ملین مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں