The news is by your side.

Advertisement

صحت کارڈ اسکیم: تحریک انصاف کے مخالفین بھی اس کے معترف ہوگئے

اسلام آباد: تحریک انصاف کی صحت کارڈ اسکیم کے مخالفین بھی معترف ہوگئے۔

تحریک انصاف کی صحت کارڈ اسکیم کو کڑی تنقید کا نشانہ بنانے والی جے یو آئی نے بھی اس کی افادیت کو تسلیم کرلیا ہے، جس کا عملی نمونہ مولانافضل الرحمان کے بھائی مولانا لطف الرحمان کے ذاتی معاون کا صحت کارڈ اسکیم سے علاج ہے۔

اسلام آباد کے نجی اسپتال میں مولانا لطف الرحمان کے ذاتی معاون کا علاج کیا گیا، جہاں لطف الرحمان کےذاتی معاون نے صحت کارڈ سے حاصل ہونے والی سہولتوں پر اطمینان کا اظہار کیا۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال اگست میں وزیراعظم عمران خان نے خیبر پختونخوا میں صحت انصاف کارڈ کی فراہمی کے پروگرام کا افتتاح کیا تھا۔

پشاور میں ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ خیبر پختونخواہ اور اسٹیٹ لائف کے درمیان معاہدے پر دستخط کے بعد صحت انصاف کارڈ کے اجرا کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ہر فیملی کو10 لاکھ انشورنس دیاجائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: حکومتی صحت کارڈ سے عام آدمی کتنے روپے تک کا علاج کرواسکے گا؟

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارامقصدپاکستان کواسلامی فلاحی ریاست بناناہے، دیہات اورچھوٹےشہروں میں بھی اسپتال بنیں گے، ہمارےپاس تمام ڈیٹاموجودہوناچاہیے، مانیٹرنگ پرخاص توجہ دیں،امریکا میں بھی ہیلتھ کارڈ پرگھپلے ہوئےتھے۔

واضح رہے کہ صوبہ خیبرپختونخواہ ملک کا پہلا صوبہ ہے جہاں ہر خاندان کو صحت انصاف کارڈ فراہم کیا گیا ہے۔

صحت انصاف کارڈ کی فراہمی کے پہلے مرحلے میں صوبے کی چالیس فیصد آبادی اس سہولت سے مستفید ہو رہی تھی،عوام کی جانب سے صحت انصاف کارڈ کی بھرپور پذیرائی کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے ہدایت کی تھی کہ اس پروگرام کا دائرہ کار وسیع کیا جائے تاکہ ہر خاندان اس سہولت سے مستفید ہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں