سال 2016 پاکستان میں شعبہ صحت کے حوالے سے کیسا رہا؟ -
The news is by your side.

Advertisement

سال 2016 پاکستان میں شعبہ صحت کے حوالے سے کیسا رہا؟

اسلام آباد : سال 2016 شعبہ صحت کے حوالے سے مجموعی طور پر کامیابیوں کا سال رہا۔

گذشتہ برس کی نسبت پولیو کیسز میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی جبکہ پاکستان نے عالمی ادارہ صحت کے آئندہ سربراہ کیلئے ہونے والے انتخابی عمل میں حصہ لینے کا اعلان کرتے ہوئے ڈاکٹر ثانیہ نشتر کو بطور امیدوار نامزد کر دیا ۔

سال دو ہزار سولہ کے دوران ملک میں سوائن فلو کے ڈھائی سو سے زائد کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ کانگو وائرس کے باعث ملک کے مختلف حصوں میں انیس افراد لقمہ اجل بنے ۔

اسی سال بیرون ملک سے اسموکنگ شیشہ اور اسکے اجزاء کی درآمد پر پابندی جبکہ کھلی سگریٹ ڈبیہ کی فروخت پر بھی پابندی کا فیصلہ کیا گیا۔

جہاں شعبہ صحت میں بڑی کامیابیاں سامنے آئی وہیں چند دوا ساز کمپنیوں کی جانب سے دو درجن سے زائد ادویات کی قیمتوں میں ساڑھے تین سو فیصد تک از خود اضافے کے جواب میں نہ مناسب ردعمل پر وزارت قومی صحت کو شدید تنقید کا نشانہ بننا پڑا ۔

مظہر نثار ڈائریکٹر عملدر آمد وزارت قومی صحت نیشنل منیجر برائے انسداد ملیریا اور ایڈز پروگرام کے مطابق رواں برس پاکستان کو ایڈز اور ملیریا کے خلاف بھی نمایاں کامیابیاں حاصل ہوئیں۔

ڈاکٹر بصیر اچکزئی نیشنل منیجر ایڈز و ملیریا کنٹرول پروگرام شعبہ صحت میں تمام تر حکومتی اقدامات اور اصلاحات کے باوجود سرکاری اسپتالوں کی حالت میں نمایاں تبدیلی دیکھنے میں نہ آئی جہاں چیک اپ کیلئے لمبی قطاروں میں انتظار کی کوفت برداشت کرنے سمیت ادویات کا حصول عام آدمی کیلئے پھربھی چیلنج بنا رہا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں