افغانستان کا دشمن پاکستان کا دشمن ہے۔ نواز شریف -
The news is by your side.

Advertisement

افغانستان کا دشمن پاکستان کا دشمن ہے۔ نواز شریف

اسلام آباد : وزیراعظم محمد نواز شریف نے واضح کیا ہےکہ افغانستان کا دشمن پاکستان کا دشمن ہے۔ وزیر اعظم اسلام آباد میں منعقدہ ہارٹ آف ایشیا کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ضرب عضب اور نیشنل ایکشن پلان کے ذریعے دہشت گردی پر کامیابی سے قابو پایا۔

اسلام آباد میں‌ ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کا آغاز ہوگیا ہے تقریب سے وزیرِاعظم نواز شریف نے بھی ابتدائی خطاب  کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان میں امن چاہتا ہے، خطے کی معاشی ترقی اور استحکام افغانستان کے امن سے منسلک ہے۔

وزیر اعظم نے افغانستان کے دشمن کو پاکستان کا دشمن قرار دیتے ہوئے کہا کہ افغانستان خود مختار ریاست ہے اسکی خود مختاری کا احترام کرتے ہیں۔ ہماری توجہ افغانستان میں پائیدار امن پر ہے، افغان مہاجرین کی باعزت واپسی چاہتے ہیں۔

وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ مجھے یقین ہے کہ مہمان ممالک خطے میں امن کیلئے متحد ہونگے،پر امن ہمسائیگی ہی ہمارا مشن ہے،چین کے ساتھ تعلقات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں ۔مسلسل امن کیلئے پر امن افغانستان ضروری ہے۔

افغان صدر کا ہارٹ آف ایشیا کانفرنس سے خطاب

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا کہ پاکستان سے مضبوط رابطوں کے خواہشمند ہیں پاکستان اور افغانستان کی عوام ایک دوسرے کے بہت قریب ہیں۔

 ہارٹ آف ایشیا کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ افغان مہاجرین کو پناہ دینے پر پاکستان کے شکر گزار ہیں۔افغان مہاجرین کا مسئلہ پاکستان اور افغانستان کا مشترکہ مسئلہ ہے۔

اسلام آباد میں منعقدہ  ہارٹ آف ایشیا کانفرنس میں بھارت،چین ، امریکا، روس ، ترکی ، ایران سمیت ستائیس ملکوں کے مندوبین شریک ہیں، اسلام آباد میں ہونے والی ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کا افتتاح وزیراعظم نوازشریف اورافغان ۔ صدراشرف غنی نے مشترکہ طورپرکیا۔

افغان صدر اشرف غنی کا شاندار استقبال

قبل ازیں افغانستان کے صدر اشرف غنی کانفرنس میں شرکت کیلئے پاکستان پہنچے تو نور خان ایئربیس پر وزیر اعظم نواز شریف نے ان کا پرتپاک استقبال کیا۔

اس موقع پر افغان صدر کو اکیس توپوں کی سلامی بھی پیش کی گئی، اور معزز مہمان کو گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔ اور دونوں ممالک کے قومی ترانوں کی دھنیں بھی بجائی گئیں۔

 وزیر دفاع خواجہ آصف، وزیر سیفران عبدالقادر بلوچ، طارق فاطمی، قومی سلامتی کے مشیر لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر جنجوعہ اور مسلح افواج کے سربراہان بھی اس موقع پر وزیراعظم نواز شریف کے ہمراہ موجود تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں