مقبوضہ کشمیرمیں35ویں دن بھی کرفیو ، بھارت مخالف مظاہرے جاری -
The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیرمیں35ویں دن بھی کرفیو ، بھارت مخالف مظاہرے جاری

سری نگر : مقبوضہ کشمیرمیں کرفیوکا آج پینتیسواں دن ہے، مسلسل کرفیو کے باعث مختلف علاقوں میں کھانے پینے کی اشیا اور دواؤں کی قلت پیدا ہوگئی، حریت کانفرنس کی اپیل پر مکمل ہڑتال ہے۔

نہتے کشمیریوں پر سات لاکھ سے زائد فوجی تعینات کرکے بھارت اپنا قبضہ برقرار رکھنا چاہتا ہے، مقبوضہ کشمیر میں 35 ویں روز بھی کرفیو اور کشیدگی برقرار ہے۔ بھارت مخالف مظاہرے روکنے کیلئے انتظامیہ نے ہندواڑہ،کپواڑہ،سوپور سمیت متعدد علاقوں میں کرفیو نافذ کر رکھا ہے۔

kashmir-3

پینتیس دن سے کرفیو کی پابندیوں میں جکڑے کشمیری بھارتی فورسزکے ظلم وتشدد کا سامنا بہت بہادری سے کررہے ہیں، انٹرنیٹ، موبائل سروس پر پابندی ہے جبکہ تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور ٹرانسپورٹ بھی بند ہے۔


 مزید پڑھیں : مقبوضہ کشمیر: ہزاروں افراد کرفیوکی خلاف ورزی کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے


مسلسل کرفیوسے مختلف علاقوں میں کھانے پینے کی اشیا اوردواؤں کی قلت پیدا ہوگئی ، بھارتی فورسز گھر گھر تلاشی کے بہانے کشمیریوں کوتشدد کا نشانہ بنا رہی ہیں۔

KASHMIR POST 3

کرفیو کے باوجود آج بھی بھارت مخالف مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے،حریت رہنماؤں نےہفتہ،اتوارکوسری نگرکےلال چوک تک ریفرنڈم مارچ کی اپیل کی ہے۔ جبکہ ہڑتال کی کال 18 اگست تک بڑھادی گئی ہے۔

kahsmir-1

گزشتہ روزحریت رہنما سیدعلی گیلانی، میرواعظ عمر فاروق کو حراست میں لیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ 8 جولائی کو مجاہد کمانڈر مظفر وانی کی شہادت کے بعد وادی میں بھارتی افواج کے خلاف شدید مظاہرے کیے گئے تھے، جن پر قابض فوج نے فائرنگ کردی تھی، جس کے بعد شہدا کی تعداد بڑھتے بڑھتے 70 سے زائد ہوگئی ہے جبکہ زخمیوں کی تعداد 5 ہزار سے زائد ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں