The news is by your side.

Advertisement

ملک بھر کے ایئر پورٹس پر ہائی الرٹ کر دیا گیا

اسلام آباد: فیڈرل انوسٹیگیشن ایجنسی (ایف آئی اے) ہیڈ کوارٹر نے ملک بھر کے ایئر پورٹس پر ہائی الرٹ کر دیا ہے۔

ذرائع کے مطابق کوئی بھی سرکاری افسر حکومتی این او سی کے بغیر بیرون ملک نہیں جا سکتا، بغیر این او سی جانے والے سرکاری افسر کو آف لوڈ کرنے کی ہدایت جاری کر دی گئی۔

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان کی جانب سے آرمی چیف کو عہدے سے نہ ہٹانے کی درخواست سماعت کے لیے مقرر کردی گئی ہے۔ درخواست چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ کچھ دیر میں سماعت کریں گے۔

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ کیا وزیراعظم سیاسی مقاصد کے لیے آرمی چیف کو عہدے سے ہٹا سکتا ہے، وزیراعظم کا کوئی بھی فیصلہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے مشروط ہوگا۔

واضح رہے کہ وزیراعظم سینئر صحافیوں سے گفتگو میں کسی کو عہدے سے ہٹانے کی تردید کرچکے ہیں۔

اس سے قبل چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ اطہر من اللہ نے کورٹ روم نمبر ون بھی کھولنے کی ہدایت کردی، عدالتی عملے کو بھی فوری اسلام آباد ہائیکورٹ طلب کرلیا گیا ہے۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ سیکریٹری اور ایڈیشنل سیکریٹری قومی اسمبلی کو عدالت طلب کیے جانے کا امکان ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم کو آرمی چیف کو نہ ہٹانے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوگی، چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ کیس کی سماعت کریں گے۔

اب سے کچھ دیر قبل وزیراعظم عمران خان نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جب بھی اہم اجلاس بلاتے ہیں تو افواہوں کا بازار گرم ہوجاتا ہے، آرمی چیف کو تبدیل کرنے کی کوئی بات نہیں ہوئی نہ سوچا ہے۔

عمران خان نے واضح کیا کہ عسکری قیادت میں کسی قسم کی کوئی تبدیلی نہیں کی جارہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی کےاجلاس میں شرکت کروں گا تنہا ہوں لیکن قوم کے لیے لڑوں گا اور سمجھوتہ نہیں کروں گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن زیادہ سے زیادہ کیا کرسکتی ہے مجھےجیل میں ڈال سکتی ہے، قوم کے لیے آخری بال تک لڑوں گا پیچھے نہیں ہٹوں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ پہلے کبھی شکست تسلیم کی نہ اب شکست تسلیم کروں گا، میں اپنا کام آئین و قانون کے مطابق کرتا رہوں گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں