The news is by your side.

Advertisement

لاہور ایئرپورٹ کے اطراف میں بلند عمارتیں طیاروں کے لیے خطرناک قرار

لاہور: ایئرپورٹ انتظامیہ نے لاہور ایئرپورٹ کے اطراف بلند عمارتیں اور کالونیوں کو طیاروں کے لیے خطرناک قرار دے دیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق ایئرپورٹ انتظامیہ نے لاہور ایئرپورٹ کے اطراف بلند عمارتوں اور کالونیوں کو طیاروں کے لیے خطرناک قرار دے دیا، ایئرپورٹ منیجر اختر مرزا نے سی اے اے کو تحفظات سے تحریری طور پر آگاہ کردیا۔

ایئرپورٹ منیجر نے خط میں کہا کہ ایئرپورٹ کے 15 کلو میٹر اطراف میں غیر قانونی تعمیرات کی گئی ہیں، لاہور بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی اور دیگر متعلقہ اداروں کو بارہا آگاہ کرنے کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

لاہور ایئرپورٹ منیجر کا کہنا ہے کہ ٹیک آف اور اپروچ ایریا کے گرد غیرقانونی تعمیرات کسی بھی وقت خطرناک حادثے کا باعث بن سکتی ہیں۔

اختر مرزا کے مطابق سول ایوی ایشن اتھارٹی کے پاس غیرقانونی تعمیرات کے خلاف کارروائی کا اختیار نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایئرپورٹ کے ارد گرد جابجا بڑے بل بورڈز، اینٹینا اور عمارتیں خطرناک صورتحال اختیار کرچکی ہیں، ایئرپورٹ منیجر نے بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی غفلت پر نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔

خیال رہے کہ 22 مئی جمعۃ الوداع کو لاہور سے کراچی آنے والا پی آئی اے کا طیارہ ایئرپورٹ کے قریب واقع ماڈل کالونی جناح گارڈن کی رہائشی آبادی پر گر کر تباہ ہوگیا تھا جس کے نتیجے میں 97 مسافر ہلاک جبکہ 2 مسافر معجزانہ طور پر بچ گئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں