The news is by your side.

Advertisement

بھارت: کھدائی کے دوران سونے کے قدیم سکے دریافت، مزدور آپس میں لڑ پڑے

بھارتی ریاست مہاراشٹرا میں ایک تعمیراتی سائٹ سے کھدائی کے دوران مغلوں کے دور کے سونے کے سکے برآمد ہوئے جن کی مالیت 1 کروڑ بھارتی روپے سے زائد ہے۔

مہاراشٹرا کے علاقے چھکیلی سے ملنے والے ان تاریخی سکوں کو پولیس نے اپنی تحویل میں لے لیا ہے، ان کے ساتھ تانبے کا ایک قدیم کنٹینر بھی دریافت ہوا ہے۔

ان سکوں کی تعداد 216 ہے جبکہ ان کا وزن مجموعی طور پر 2 ہزار 357 گرام ہے، ایک سکے کی مالیت 60 سے 70 ہزار بھارتی روپے ہے اور تمام سکوں کی کل مالیت 1 کروڑ 30 لاکھ بھارتی روپے ہے۔

ماہرین کے مطابق یہ سکے 1720 سے 1750 عیسوی کے درمیان کے ہیں، سکوں پر اردو اور عربی میں راجہ محمد شاہ کی مہر لگی ہوئی ہے۔

مزدوروں کا جھگڑا انہیں لے ڈوبا

مقامی پولیس کو چند روز قبل اطلاع ملی تھی کہ صدام سالار خان پٹھان نامی ایک شخص ان سکوں کو غیر قانونی طور پر چھپائے بیٹھا ہے، پولیس نے زیورات کی پہچان کے ماہرین کے ساتھ اس کے گھر پر چھاپہ مارا اور سکے برآمد کرلیے۔

پولیس کا کہنا ہے 3 ماہ قبل صدام کے سسر اور سالا دوسرے ضلعے سے یہاں مزدوری کے لیے آئے تھے، صدام انہیں قریب واقع ایک تعمیراتی سائٹ پر لے گیا۔

وہاں کام کرنے کے کچھ روز بعد کھدائی کے دوران دونوں باپ بیٹے کو کچھ طلائی سکے ملے، وہ انہیں صدام کے گھر لائے اور اسے دکھایا۔ صدام انہیں لے کر واپس اس جگہ پہنچا اور مزید کھدائی کی تو انہیں 216 سکے اور تانبے کا کنٹینر ملا۔

یہ انہیں خاموشی سے گھر لے آئے تاہم اس کی تقسیم کے معاملے پر تینوں میں پھوٹ پڑ گئی جس سے بات پھیل گئی اور پولیس تک جا پہنچی۔

پولیس نے سکے اور کنٹینر محکمہ آثار قدیمہ کے حوالے کردیے ہیں جبکہ صدام اور اس کے عزیزوں کو وارننگ دے کر گھر بھیج دیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں