The news is by your side.

Advertisement

مدافعتی نظام کی مدد سے تیس سالہ خاتون نے’ایچ آئی وی‘ کو شکست دے دی

امریکی ریاست کیلی فورنیا کے شہر سان فرانسسکو سے تعلق رکھنے والی خاتون نے ایچ آئی وی کو شکست دے دی۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق ایچ آئی وی ایڈز سے صحت یاب ہونے والی خاتون دنیا کی دوسری مریض ہیں، جن کے مضبوط مدافعتی نظام کی بدولت اُن کے جسم سے وائرس ختم ہوا۔

عام طور پر ڈاکٹرز ایڈز سے متاثرہ افراد کو اینٹی ریٹرو ادویات پابندی سے کھانے کی ہدایت کرتے ہیں، جس کے ذریعے کئی سو میں سے ایک کا مدافعتی نظام متحرک ہوتا ہے۔

اس جیسے موذی مرض کو شکست دینے والی تیس سالہ خاتون کے ڈاکٹرز نے بتایا کہ انہوں نے ادویات سے زیادہ اپنے مضبوط مدافعتی نظام کی بدولت اس مرض سے چھٹکارا حاصل کیا ہے۔

مزید پڑھیں:  عالمی ادارۂ صحت نے پاکستان کی تعاون فراہمی کی درخواست قبول کر لی

اس سے قبل گزشتہ برس سانس فرانسسکو سے ہی تعلق رکھنے والے شہری نے بھی مدافعتی نظام کو متحرک اور مضبوط کر کے موذی مرض کو شکست دی تھی۔

انٹرنیشنل میڈیسن کی رپورٹ کے مطابق خاتون اپنے شریک حیات کی وجہ سے موذی مرض کا شکار ہوئیں تھیں۔

ماہرین نے ان دونوں مریضوں کے شفایاب ہونے کو ایک نئی امید قرار دیا اور بتایاکہ خاتون ایڈز کی سب سے خطرناک قسم ’ ایسپرانزا‘ سے متاثر تھیں، جن کے مدافعتی نظام سے وائرس کو بڑھنے سے روکا اور جسم میں ٹی نامی خلیات پیدا کیے، جس سے وائرس مکمل طور پر ختم ہوگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں