The news is by your side.

Advertisement

بھارت: ہومیو پیتھک ڈاکٹرز کو بھی کرونا مریض دیکھنے کی اجازت مل گئی، لیکن کن شرائط کے ساتھ؟

نئی دہلی: بھارت میں اب ہومیو پیتھک ڈاکٹرز بھی کرونا وائرس کے مریضوں کو دیکھ سکیں گے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں کرونا وائرس کی تباہ کاریوں کے باعث صورت حال بے قابو ہو چکی ہے، اسپتال کرونا مریضوں سے بھرے پڑے ہیں، اور مریضوں کو بستر نہیں مل رہے، جس کے باعث اموات کی شرح بھی بڑھتی جا رہی ہے۔

ایسے میں حکومت نے سرکاری طور پر کرونا مریض دیکھنے کے لیے ہومیوپیتھک ڈاکٹرز کو بھی اجازت دے دی ہے، تاہم اس سلسلے میں ان کے لیے سخت گائیڈ لائنز بھی جاری کیے گئے ہیں۔

وزارت آیوش وزارت کی ہدایات کے مطابق ہومیو ڈاکٹرز کو بغیر علامات اور ابتدائی علامات والے کرونا مریضوں ہی کو دیکھنا ہے، جب کہ ان پر لازم ہوگا کہ وہ سنگین نوعیت کے مریضوں کو بڑے اسپتالوں میں بھیجیں۔

وزارت کی گائیڈ لائنز میں کہا گیا ہے کہ جو مریض ہوم آئسولیشن میں زیر علاج ہیں، انھیں ہومیوپیتھک ڈاکٹر دیکھ سکتے ہیں، تاہم ان مریضوں کو کرونا کے پورے پروٹوکول پر عمل کرنا ہوگا، ہومیو ڈاکٹرز انھیں 2 گز فاصلے، ماسک پہننے، اور ہاتھوں کو دھونے کی تلقین کریں گے۔

ڈسٹرکٹ ہومیو پیتھک میڈیکل آفیسر ڈاکٹر للت موہن جوہری نے بتایا کہ گائیڈ لائنز میں کہا گیا ہے کہ بغیر علامات والے کرونا مثبت مریضوں کو 7 دن کے لیے دن میں 2 بار آرسینیکم البم 30c کی چار گولیاں ہومیوپیتھک ڈاکٹروں کو دینی چاہیے۔

گائیڈ لائن کے مطابق ہلکی علامات کے مریضوں کو ایکونائٹم نیپولس، آرسینیکم البم، بیلاڈونا، بیرونیا ایلبا، یوپیٹوریم پرولیئٹیم ، فیرم فاسفوریکم، گلاسیم فاسفورس، راس ٹیکسکوڈینڈرم کی دوائیں تجویز کی جائیں گی، نیز ڈاکٹر مریض کی حالت دیکھ کر دوا کی مقدار کا تعین کرے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں