The news is by your side.

Advertisement

غیرت کے نام پر قتل کے ملزم کی پراسرار موت

حیدرآباد : غیرت کے نام پر داماد کو قتل کرنے والا شخص گھر سے مردہ حالت میں ملا، پولیس نے خود کشی کا شبہ ظاہر کیا ہے، ماروتی راؤ2018 میں24سالہ پرانئے کے قتل معاملہ کا اصل ملزم تھا۔

تفصیلات کے مطابق عزت کے نام پر قتل کی واردات کے اصل ملزم کی موت واقع ہوگئی، ماروتی راؤ سال2018 میں 24سالہ داماد پرانئے کے قتل معاملہ کا اصل ملزم تھا جو حیدرآباد کے ایک علاقہ میں واقع اپنے کمرہ نمبر306میں مردہ حالت میں پایا گیا۔

اس حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ یہ پتہ نہیں چل سکا کہ ملزم ماروتی راؤ حیدرآباد کیوں آیا تھا؟ پولیس نے اس کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے اسپتال منتقل کردیا۔

پولیس نے شبہ ظاہر کیا کہ اس نے خودکشی کی ہے، ماروتی راؤ پر پرانئے کے قتل کے لئے ایک کروڑ روپئے کی رقم ادا کرنے کا بھی الزام ہے۔

واضح رہے کہ مقتول پرانئے نے ملزم ماروتی راؤ کی بیٹی سے شادی کی تھی، ذات کی اونچ نیچ پر اس نے شادی کی شدید مخالفت کی تھی کیونکہ پرانئے دلت تھا اور ملزم کی ذات اونچی تھی۔

جائے واردات پر قتل کی یہ واردات سی سی ٹی وی کیمرے میں ریکارڈ ہوگئی تھی جس نے پوری ریاست میں سنسنی پھیلادی تھی، قتل کے وقت ماروتی راؤ کی بیٹی حاملہ تھی۔

بعد ازاں اپریل2019میں عدالت سے ماروتی راؤ اور اس معاملہ کے دیگر ملزمان کی ضمانت منطور ہوگئی تھی کیونکہ پولیس اندرون 90دن چارج شیٹ داخل کرنے میں ناکام ہوگئی تھی۔ ضمانت پر رہائی کے بعد سے ملزم مریال گوڑہ میں واقع اپنے مکان میں رہ رہا تھا۔

پولیس کا خیال ہے کہ ماروتی راؤ نے زہر پی کر اپنی زندگی کا خاتمہ کیا ہے، پولیس مختلف زاویوں سے اس معاملہ کی جانچ کررہی ہے، تاہم صورتھاقل پوقسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد واضح ہوگی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں