The news is by your side.

Advertisement

ڈراؤنے گھر سے چیخوں کی آوازیں، 14 لاشیں قبر سے برآمد

سان سلوا ڈور : وسطی امریکہ کے ملک سلوا ڈور کے ایک ویران قصبے میں ایک پراسرار گھر سے برآمد ہونے والی اجتماعی قبر نے علاقہ مکینوں میں دہشت پھیلا دی، گھر سے آنے والی دردناک چیخوں کی آواز نے خوف میں مبتلا کردیا۔

دارالحکومت سان سیلواڈور سے 80 کلو میٹر دور  واقع ایک چھوٹے سے قصبے چالچواپا میں واقع ایک پراسرار گھر کے پڑوسیوں نے درد ناک چیخوں کی آوازیں سنیں تو پولیس کو مطلع کیا۔

پڑوس میں رہنے والے ایک شخص نے بتایا کہ اسے اپنے گھر کے پڑوس سے ایک نوجوان عورت کے چیخنے کی آوازیں صاف سنائی دے رہی تھیں، اس گھر میں 26سالہ جیکولن پالولیما اور اس کی والدہ رہائش پذیر ہیں۔

اس نے اپنے گھر کی کھڑکی سے دیکھا کہ جیکولن پالولیما جب چیختی ہوئی گھر سے باہر بھاگی تو پیچھے سے آنے والے ایک شخص نے اس کے سر لوہے کا پائپ مارا جس کے بعد وہ گر گئی۔

مذکورہ شخص اور گھسیٹتا ہوا گھر کے اندر لے گیا۔ وہ شخص 51 سالہ سابق پولیس اہلکار ہیوگو آسوریو تھا، مقامی میڈیا نے اس مکان کو ” ہاؤس آف ہاررز” قرار دیا ہے۔

اس حوالے سے وزیر انصاف گوستاو ولاٹو نے صحافیوں کو بتایا کہ پولیس حکام کے پہنچنے تک جیکولن پالولیما اس کے بھائی اور اس کی والدہ کی لاشیں ملی تھیں، اس کے علاوہ پولیس کو ابتدائی طور پر گھر کے پچھلے حصے سے مزید 14لاشیں ایک اجتماعی قبر سے بھی ملیں۔

پولیس نے ملزم سابق پولیس اہلکار ہیوگو آسوریو کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ ملزم نے مبینہ طور پر اعتراف جرم بھی کرلیا ہے دوسری جانب مقامی میڈیا ملزم آسوریو  یا اس کے وکیل تک نہیں پہنچ سکا اور مبینہ طور پر اس کے اعتراف جرم کی تصدیق بھی نہیں ہوسکی ہے۔ تاہم اٹارنی جنرل کے دفتر نے اس معاملے کو خفیہ قرار دیتے ہوئے کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں