site
stats
عالمی خبریں

ہوسٹن : مسجد کے باہر مسلمان ڈاکٹر پر فائرنگ

ہوسٹن : امریکی ریاست ہوسٹن میں نامعلوم افراد نے ایک مسلمان ڈاکٹر پر مسجد کے باہر فائرنگ کردی ، جس کے نتیجے میں ڈاکٹر شدید زخمی ہوگئے، تاہم حملے کی وجہ واضح نہیں ہوسکی۔

تفصیلات کے مطابق آج علی الصبح ہوسٹن میں واقع مسجد کے باہر 3مسلح افراد نے مسلمان ڈاکٹر پر حملہ کرکے فائرنگ کردی، جس سے وہ زخمی ہو گئے، زخمی حالت میں انھیں قریبی اسپتال لے جایا گیا۔

ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر ارسلان کو 2 گولیاں ماری گئی تھیں، جو آپریشن کے بعد نکال لی گئی ہیں اور اس کی حالت بہتر ہونے کی توقع ہے مگر 24 گھنٹے انتہائی اہم ہیں اور ان انتہائی نگہداشت یونٹ میں رکھا جائے گا۔

ڈاکٹر ارسلان کا تعلق البرٹا سے ہے جو کہ نوا سائوتھ ویسٹرن یونیورسٹی سے گریجویٹ ہیں اور ہوسٹن میں ہمبل شہر میں آنکھوں کے ڈاکٹر کی حیثیت سے پریکٹس کرتے ہیں، ڈاکٹر ارسلان مسلم کمیونٹی کے سرگرم رہنما بھی ہیں اور کینڈا،فلوریڈااور ٹیکساس کی مسلم کمیونٹی کی فلاح و بہبود کے کاموں میں برھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق مسلمان ڈاکٹر پر حملہ کرنے والے افراد تین تھے، جنہوں نے نقاب کے ساتھ اپنے چہرے کو چھپا رکھا تھا۔ حملہ آوروں میں سے ایک نے چاقو سے وار کر کے مسلمان کو زخمی کر دیا بعد میں دوسرے شخص نے پستول نکال کر اسے گولی مار دی، واقعے کے بعد علاقے کے مسلمانوں میں شدید خوف پھیل گیا ہے۔

واضح رہے کہ ہیوسٹن میں ایک ہفتہ کے دوران اس طرح کا ہونے والا یہ تیسرا واقعہ ہے، جس میں مسلمانوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

یاد رہے کہ امریکا کی ریاست فلوریڈا میں مسجد کے باہر نامعلوم افراد نے مسلمان شخص پر تشدد کیا گیا تھا، اور اس واقعے کے ایل دن بعد ہی اورلینڈو میں نائٹ کلب میں فائرنگ کا واقع پیش آیا، مسجد ترجمان کے مطابق حملہ آور عمر متین اس مسجد میں نماز پڑھتا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top