The news is by your side.

Advertisement

حدیدہ: حوثیوں کا نصب کردہ دھماکا خیز مواد پھٹنے سے چار بچے جاں بحق

صنعا: یمن کے مغربی صوبے حدیدہ میں حوثی ملیشیا کا نصب کیا ہوا دھماکا خیز مواد پھٹنے سے ایک ہی خاندان کے چار بچے جاں بحق اور دو زخمی ہو گئے، یہ تمام بچے بہن بھائی ہیں۔

عرب ٹی وی کے مطابق یہ واقعہ الحدیدہ کے ضلع حیس میں وادی نخلہ کے علاقے میں اس وقت پیش آیا جب مذکورہ بچے اپنے گھر کے باہر کھیل رہے تھے۔

مقامی ذرائع نے اس اندیشے کا اظہار کیا کہ علاقے میں اسی طرح کے مزید دھماکے ہو سکتے ہیں۔ اس سے قبل موسلا دھار بارشوں کے سبب حوثی ملیشیا کی بچھائی گئی بارودی سرنگوں کا انکشاف ہوا تھا۔

یمن کی مشترکہ فورسز کے میڈیا ونگ کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ الجراحی ضلع کے جنوب میں بالخصوص البغیل، بیت الزین، المساجد، القداسی اور العکدہ کے دیہات میں حوثی ملیشیا کی جانب سے بھاری تعداد میں بچھائی گئی بارودی سرنگیں اور نصب کیے گئے دھماکا خیز مواد کا پتہ چلا ہے۔

سعودی آئل فیکٹریوں پر حملے کے بعد حوثی باغیوں کے خلاف تابڑتوڑ کارروائیاں، 16 شدت پسند ہلاک

ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے مغربی ساحل کے علاقے کو دنیا میں بارودی سرنگوں کی سب سے بڑی فیلڈز میں سے ایک بنا دیا۔ شاید ہی کوئی دن ایسا گزرتا ہو جب علاقے کے دیہات، کھیتوں اور عام راستوں میں مقامی لوگ مذکورہ سرنگوں کا نشانہ نہ بنتے ہوں۔ ان میں بڑی تعداد خواتین اور بچوں کی ہوتی ہے۔

ادھر ایران نواز حوثی ملیشیا نے پیر کے روز بھی سویڈن معاہدے کے تحت طے پانے والی جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری رکھا۔ اس دوران الحدیدہ صوبے کے ضلع الدریہمی کے مشرقی اور جنوبی علاقوں میں یمنی مشترکہ فورسز کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں