The news is by your side.

Advertisement

شہباز شریف خاندان کے اثاثوں میں کیسے اضافہ ہوا، بے نامی دار کون؟ تفصیلات سامنے آ گئیں

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) کے دستاویزات میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ میاں شہباز شریف کے خاندان کے اثاثوں میں کیسے اضافہ ہوا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق نیب کے دستاویزات سے شہباز شریف خاندان کے اب تک 2 ارب 40 کروڑ کے بے نامی داروں کی تفصیلات سامنے آ گئیں، شہباز فیملی کی 4 بے نامی کمپنیاں جب کہ 3 بے نامی دار ہیں۔

نیب دستاویزات میں انکشاف کیا گیا ہے کہ شہباز خاندان کے بے نامی دار نثار احمد، سید طاہر نقوی اور علی احمد ہیں، جب کہ بے نامی کمپنیوں میں گڈ نیچر، یونی ٹاس، وقار ٹریڈنگ اور نثار ٹریڈنگ شامل ہیں۔

نیب کے مطابق سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف جب سیاست میں آئے تو 1990 میں 21 لاکھ کے اثاثوں کے مالک تھے، لیکن دس سال بعد 2000 میں شہباز شریف کے اثاثے 1 کروڑ 50 لاکھ 90 ہزار تھے، 2018 میں ان کے اثاثے 18 کروڑ 96 لاکھ 49 ہزار تک پہنچ گئے۔

شہباز شریف کی عبوری ضمانت میں 29 جون تک توسیع

نیب دستاویزات میں مزید کہا گیا ہے کہ بیگم نصرت شہباز کے 2003 میں اثاثے صفر تھے، 2009 میں 13 کروڑ 41 لاکھ، اور 2018 میں 23 کروڑ 34 لاکھ ہو گئے۔

حمزہ شہباز کے 2000 میں اثاثے 2 کروڑ 22 لاکھ تھے جب کہ 2018 میں 41 کروڑ 71 لاکھ ہو گئے، سلمان شہباز کے اثاثے 2002 میں 65 کروڑ 50 لاکھ تھے، 2018 میں 2 ارب 58 کروڑ 98 لاکھ ہو گئے، رابعہ عمران کے اثاثے 1999 میں 1 کروڑ 69 لاکھ تھے، 2018 میں 11 کروڑ 81 لاکھ سے زائد ہو گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں