The news is by your side.

Advertisement

روزے میں پیاس کی شدت کو کم کرنے کے طریقے، ویڈیو دیکھیں

رواں برس بھی ماہ رمضان شدید گرمیوں کے موسم میں آیا ہے جس سے روزے داروں کے لیے بیک وقت دینی عبادت کرنا اور صحت کا خیال رکھنا مشکل ترین کام بن گیا ہے۔

موسم گرما کے روزے میں سب سے مشکل کام جسم کو پانی کی کمی اور سارا دن پیاس نہ لگنے کے احساس سے بچانا ہے۔ خصوصاً ان افراد کے لیے جو دن کے اوقات میں کام کاج کے لیے گھروں سے باہر جاتے ہیں اور اُن خواتین کے لیے جن کا زیادہ تر وقت باروچی خانے میں چولہے کے آگے گزرتا ہے۔

سخت محنت اور بہت زیادہ گرمی کی وجہ سے جب پسینہ نکلتا ہے تو روزے دار کے جسم میں پانی کی کمی ہوتی ہے جس کے بعد اُسے پیاس کی شدت بہت زیادہ محسوس ہوتی ہے۔

کون زیادہ خطرے میں ہے؟

ماہر طب ڈاکٹر اریج نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام شامِ رمضان میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ 60 سال سے زائد عمر کے افراد، اور ذیابیطس، امراض قلب اور ہائی بلڈ پریشر کے مریضوں کا جسم کمزور ہوتا ہے جن پر گرمی سمیت کسی بھی چیز کا اثر فوری ہوتا ہے، ایسے افراد خاص طور پر پانی کی کمی نہ ہونے دیں اور خوصی احتیاط کریں۔

سحروافطارمیں کیا کھایا جائے؟

دن بھر پانی کی کمی سے بچنے اور صحت مند رہنے کے لیے ضروری ہے کہ سحر و افطار میں ایسی غذاؤں کا استعمال کیا جائے جو جسم کی غذائی ضروریات بھی پوری کریں اور آپ کو توانائی پہنچائیں اور مرغن کھانوں سے پرہیز کیا جائے۔

سحری کے وقت میں کچی لسی میں الائچی کا پاؤڈر ڈال کر پینے سے پیاس لگنے کا احساس کم ہوجاتا ہے جبکہ روزے دار کو چاہیے کہ وہ سحری میں چار سے پانچ گلاس پانی ضرور استعمال کرے۔

سحر و افطار میں استعمال کیے جانے والے مشروب

ڈاکٹر اریج کے مطابق روزے دار سحر و افطار میں پانی اور جوس کا استعمال کریں کیونکہ پھلوں کا جوس جسم میں ہونے والی نمکیات کی کمی کو پورا دیتا ہے جبکہ کولڈرنک اور دیگر مشروب پیاس کی شدت کو بڑھاتے ہیں۔

پھلوں خاص طور پر تربوز، گرمے کا استعمال کیا جائے۔ علاوہ ازیں کھیرا اور مختلف سلاد کا استعمال بھی فائدے مند ہے۔

دلیے میں کیلا اور شہد ملا کر کھائیں، افطار میں بھی کم تیل والی اشیا کا استعمال کریں۔

احتیاطی تدابیر

سحری میں کیفین مشروبات، چائے کافی سے حتی الامکان پرہیز کیا جائے، مصالحہ دار اور چٹپٹی غذاؤں کے بجائے سادہ کھانے استعمال کیے جائیں۔ سحری میں دہی اور لسی بہترین غذائیں ہیں۔

افطار کے اوقات میں ایک ساتھ 7 یا 8 گلاس پانی پینا صحت کے لیے بہت زیادہ نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے، رات کو ایک پانی کی بوتل اپنے قریب رکھیں۔

کوشش کریں کہ  روزے کی حالت میں گرم اور دھوپ والی جگہوں پر کم سے کم جائیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں