ہیومن رائٹس کمیشن کا کراچی سے اغوا شدہ لڑکیوں کی بازیابی کا مطالبہ -
The news is by your side.

Advertisement

ہیومن رائٹس کمیشن کا کراچی سے اغوا شدہ لڑکیوں کی بازیابی کا مطالبہ

لاہور: ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان نے ماہ ستمبر میں کراچی سے اغوا ہونے والی تین لڑکیوں کی فی الفور بازیابی کا مطالبہ کرتے ہوئے اغوا کی وارداتوں اورخواتین کی اسمگلنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات پرتشویش کا اظہارکیا ہے۔

ہیومن رائٹس کمیشن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ کمیشن کو7 ستمبرکوکراچی سے اغوا ہونے والی لڑکیوں کے بارے میں تشویش ہے جن کے بارے میں اطلاعات ہیں کہ انہیں سندھ کے کسی دوردرازعلاقے میں رکھا گیا ہے۔

اعلامیے میں یہ بھی کہاگیا کہ کمیشن نے سندھ پولیس اور حکام کو بھی اس حوالے سے تحریری طور پراپنے تحفظات سے آگاہ کردیا ہے اور لڑکیوں کی جلد ازجلد محفوظ بازیابی کا مطالبہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اغوا شدہ لڑکیوں کے نام سورت عمری، نگینہ اور سبینہ بتائے گئے ہیں اورتینوں کم عمرہیں ان کے والدین نے اغوا کی ایف آئی آر درج کرا رکھی ہے ۔ والدین نے پولیس کو یہ بھی بتایا ہے کہ اغوا کاروں نے لڑکیوں کی بازیابی کے لیے 10 لاکھ روپے تاوان کا مطالبہ کیا ہے۔

تاحال صرف ایک شخص گرفتار کیا جاسکا ہے جس سےاطلاع ملی ہے کہ لڑکیوں کراچی سے لاڑکانہ منتقل کیا گیا پھر وہاں سے شکار پور کے راستے پاک بھارت سرحد کے نزدیک واقع گاوٗں خانپورمنتقل کیا جاچکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں