The news is by your side.

Advertisement

پاکستانی چاول کی پڑوسی ملک میں زبردست مانگ، تاجرخوش

تہران: پاکستان اور ایران نے نجی شعبے میں تجارتی لین دین کے فروغ اور اس کے حجم کو سالانہ پانچ ارب ڈالر تک پہنچانے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تہران میں پاکستانی سفارتخانے اور رائس ایکسپورٹرز ایسو سیئیشن آف پاکستان (ریپ) کے تعاون سے پاکستانی چاول کے ایک فیسٹیول کا انعقاد کیاگیا۔

تہران کے اسپیناس گرینڈ ہوٹل میں منعقدہ اس فیسٹیول میں ایران کے سرکاری حکام، پاکستان کے سفارتکار، چاول درآمد کرنے والے ایرانی تاجر اور پاکستان کی تاجر برادری سے تعلق رکھنے والے افراد شریک تھے۔

اس موقع پر ایران کی وزارت برائے زرعی جہاد میں شعبہ بین الاقوامی امور کے ڈائریکٹر جنرل ہومن فتحی نے چاول کے پاکستانی برآمد کنندگان کا خیرمقدم کیا۔

یہ بھی پڑھیں: گندم درآمد کرنے کیلیے سب سے کم بولی والے ٹینڈر کی منظوری

تقریب سے پاکستانی چاول برآمد کرنے والوں کی تنظیم کے سربراہ علی حسام اصغر نے چاول کی پاکستان سے ایران برآمدات کی گنجائشوں کا ذکر کیا اور کہا کہ اس وقت ایران کی چاول مارکیٹ میں پاکستانی چاول کا حصہ تیس فیصد تک پہنچ گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستانی چاول ایک اچھے معیار اور کوالٹی کا حامل ہے جس کے باعث خطے میں اسکی ڈیمانڈ بڑھتی جا رہی ہے۔

اس موقع پر پاکستانی سفیر رحیم حیات قریشی نے بھی ایران و پاکستان کے مابین خصوصاً نجی شعبے میں تجارتی لین دین کے فروغ اور اسکے حجم کے سالانہ پانچ ارب ڈالر تک پہنچنے کا اعادہ کیا۔

فیسٹیول کے موقع پر دونوں ممالک کی تاجر برادری نےاقتصادی لین دین میں اضافے کے ساتھ ساتھ بارٹر ٹرید کی اہمیت اور اس کے فروغ پر بھی زور دیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں